اداریہ مضامین

وجود زن سے ہے تصویر کائنات میں رنگ

سبزار احمد بٹ ۔۔۔اویل نورآباد شہر کا تبدیل ہونا شاد رہنا.

اپنے بچے کو سہارا دیجئے

تحریر : ڈاکٹر نذیر مشتاق بچوں اور والدین کی سوچ اوربرتائو.

سرکش قوم کا زوال اٹل ہے

تحریر: عابد حسین راتھر جب سے کائنات وجود میں آئی ہے اور انسان.

احسان فراموش

افسانہ نگار: ملک منظور قصبہ کھُل کولگام
رحمان اور اس.

کرایہ میں اضافہ گویا مہنگائی کا جن بوتل سے باہر

اداریہ پچھلے دنوں حکومت کی جانب سے کرایہ میں 19فیصد کا اضافہ.

    ادب نامہ

  • افسانہ......................بویا ہوا پــل

    افسانہ………………….بویا ہوا پــل

    افسانہ نگار: پرویز مانوس لمبا سفید ریش ،سر پر گول سفید ٹوپی،جسم پر سبز رنگ کا خان سوٹ ، اُس کے ذہن پر چھائے ہوئے خوف میں بتدریج اضافے کا سسب بن رہے تھے ،وہ اپنے خزاں رسیدہ لبوّں پر مصنوعی مُسکراہٹ.

  • مانوس اجنبی

    مانوس اجنبی

    گل گلشن ۔۔ممبئی وہ تقریبا آٹھ سالوں سے ہمارا پڑوسی تھا۔شاید روزگار کے لئے یہاں اکیلا رہتا تھا۔ہمیشہ چپ چاپ اور خاموش رہتا تھا۔پتہ نہیں کون سا راز پوشیدہ تھا اس کی خاموشی میں۔اتنے عرصے میں کبھی بھی.

  • چاہتوں کے پُر کشش آغاز کی باتیں کریں

    غزل ذکی طارق بارہ بنکوی چاہتوں کے پُر کشش آغاز کی باتیں کریں
    پھر کسی سلمیٰ کسی شہناز کی باتیں کریں
    یہ بیانِ غم غزل میں آپ لے آئےکہاں
    اس سراپا ناز کے انداز کی باتیں کریں
    جو بہر لمحہ پہنچ.

  • دور ہم سے وہ دیوانی چلی گئی

    دور ہم سے وہ دیوانی چلی گئی

    ظفر صدیقی۔۔۔لکھنؤ دور ہم سے وہ دیوانی چلی گئی
    لب چُم دیکر نشانی چلی گئی
    دوریاں اس قدر بڑھائی ہمسے
    نزدیکیاں غیر سے بڑھاتی چلی گئی
    سوچا اسکو تو سوچتا ہی رہا
    آنکھ عشق بھاتی چلی گئی

  • مجھ بھی چشم کرم میرے خدا ہوجائے

    مجھ بھی چشم کرم میرے خدا ہوجائے

    نعت مصطفٰے ﷺ محمد زاہد رضا بنارسی   مجھ بھی چشم کرم میرے خدا ہوجائے
    یعنی دیدار مدینے کا عطا ہوجائے
    ہیچ پھر اس کی نگاہوں میں شہنشاہی ہو
    میرے سرکار کے درکا جو گدا ہو جائے
    کاش پاجائے مری.

  • جام خالی ہے صراحی دوٗر ہے

    جام خالی ہے صراحی دوٗر ہے

    غزل بلال صہبا جام خالی ہے صراحی دوٗر ہے
    نوش کی ہے نا نشے میں چوٗر ہے
    گِر رہا ہے اشک پیہم آنکھ سے
    درد سے دل اس قدر رنجور ہے
    برق سے یکلخت میں جو راکھ ہو
    لن ترانى کا نہیں یہ طوٗر ہے
    ہم.