ویڑیو

ای پیپر

اہم خبریں

آج یہاں سنور کلی پورہ ماگام میں گلشن کلچرل فورم کشمیرکے اہتمام سے ایک ادبی.

جدید دور میں گرمی دینے والے آلات کے باوجود بھی کانگڑی کی اہمیت برقرار

آٹھ زونوں سے لڑکوں اور لڑکیوں نے حصہ لیا
پلوامہ/ تنہا ایاز /
یوتھ سروسز.

سخت ترین سیکورٹی انتظامات کے بیچ دسویں جماعت کے سالانہ امتحانات کا با ضابطہ آغاز

   81 Views   |      |   Tuesday, January, 26, 2021

سخت ترین سیکورٹی انتظامات کے بیچ دسویں جماعت کے سالانہ امتحانات کا با ضابطہ آغاز نصاب میں 40فیصدی رعایت کا فائدہ اُٹھانے کیلئے صد فیصدی امید واروں کی امتحان میں شرکت سرینگر/11نومبر/نصاب میں 40فیصد کی رعایت کے ساتھ سردی کی لہر اور سخت ترین سیکورٹی انتظامات کے بیچ کشمیر وادی میں بدھ کو دسویں جماعت کے سالانہ امتحانات کا با ضابطہ طور پر آغاز ہو ا جس دوران پہلے پرچے میں99فیصد طلباء و طالبات نے امتحانات میں شمولیت کی ۔ادھر کورنا وائرس کے پیش نظر امتحانی مراکز میں مکمل طور پر ایس او پیز پر عملدر آمد ہوا جبکہ واضح کردہ گائیڈ لائینوں پر بھی من و عن عمل کیا گیا ۔ سی این آئی کے مطابق بدھ کوسخت ترین حفاظتی انتظامات کے بیچ دسویں جماعت کے امتحانات کا آغاز ہوا ۔بدھ کی اعلیٰ صبح سے ہی شہر سرینگر اور وادی کے دیگر اضلاع میں دسویں جماعت میں زیر تعلیم بچوں نے اپنے والدین کے ہمراہ امتحانی مراکز کا رخ کیا ۔معلوم ہوا ہے کہ طلباء طالبات نے اعلیٰ صبح سے ہی امتحانی مراکز کا تک پہنچنے کی کوشش کی اور شدید سردی کی لہر کے باوجود امتحانات سے ایک گھنٹہ قبل ہی امتحانی مراکز تک پہنچ گئے تھے اور بے صبری سے اس گھڑی کے انتظار میں تھے کہ کب ان کا امتحان شروع ہو جائے گا ۔سٹی رپورٹر کے مطابق انتظامیہ نے امتحانات کو خوش اسلوبی کے ساتھ ابجام دینے اور کسی بھی امکانی گڑ بڑھ سے نمٹنے کیلئے امتحانی مراکز کے باہر سخت ترین سیکورٹی کے انتظامات کئے تھے ۔بتایا جاتا ہے کہ امتحانات کا آغاز جیسے ہی ہوا تو ہزاروں کی تعداد میں طلبہ نے شرکت کی ۔اسی دوران اسٹیٹ بورڈ ااف اسکول ایجوکیشن کی طرف سے جاری اعداد و شمار کے مطابق دسویں جماعت کے پہلے پرچے میں امتحانات کیلئے 99فیصد طلباء و طالبات نے حصہ لیا ۔ امتحانی عمل پر نظر گزر رکھنے کیلئے تمام ڈپٹی کمشنروں کے دفاتر میں کنٹرول روم ہمہ وقت متحرک رہا کریں گے تاکہ کسی بھی طرح کی صورتحال سے بر وقت نپٹا جاسکے ۔ اسی دوران معلوم ہوا ہے کہ پورے وادی کشمیر میں امتحانات بڑی خوش اسلوبی کے ساتھ منعقد ہوئے اور کسی جگہ سے کسی نا خوشگوار واقعہ کی کوئی اطلاع نہیں ہے ۔قابل ذکر ہے کہ امتحانات میں قریب ایک لاکھ6ہزار465 طلاب شرکت کریں گے،جن میں وادی کے 74 ہزار 465 اور جموںکے32ہزار طلاب شامل ہیں۔ بورڈ ااف اسکول ایجوکیشن نے ان امتحانات کیلئے1145امتحانی مراکز قائم کئے ہیں جن میں وادی میں814اور جموں میں331مراکز شامل ہیں۔ امتحانات بورڈ اآف اسکول ایجوکیشن کی نگرانی میں منعقد ہونگے۔ ان مراکز کی تعداد ا میں اس لئے اضافہ کیا گیا کیونکہ ماضی کے مقاملے میں ان مراکز میں نصف تعداد میں ہی طلاب کو حال میں بیٹھنے کی اجازت ہوگی۔اس بات کا پہلے ہی اعلان کیا گیا ہے کہ امتحانات کورونا معیاری عملیاتی طریقہ کار کے عین مطابق منعقد کرائے جائیں گے،جبکہ امتحانی مراکز میں جسمانی فاصلے کو عملاتے ہوئے سینٹی ٹائزر اور دیگر صفائی ستھرائی کا انتظام، جہاں ہوگا وہی امتحانی مرکز میں داخل ہونے سے قبل امیدواروں کی تھرمل جانچ بھی ہوگی۔ حکام کا کہنا ہے کہ انہوں نے احسن طریقے سے امتحانات منعقد کرنے کیلئے تمام تر انتظامات کئے ہیں۔

نصاب میں 40فیصدی رعایت کا فائدہ اُٹھانے کیلئے صد فیصدی امید واروں کی امتحان میں شرکت
سرینگر/11نومبر/نصاب میں 40فیصد کی رعایت کے ساتھ سردی کی لہر اور سخت ترین سیکورٹی انتظامات کے بیچ کشمیر وادی میں بدھ کو دسویں جماعت کے سالانہ امتحانات کا با ضابطہ طور پر آغاز ہو ا جس دوران پہلے پرچے میں99فیصد طلباء و طالبات نے امتحانات میں شمولیت کی ۔ادھر کورنا وائرس کے پیش نظر امتحانی مراکز میں مکمل طور پر ایس او پیز پر عملدر آمد ہوا جبکہ واضح کردہ گائیڈ لائینوں پر بھی من و عن عمل کیا گیا ۔ سی این آئی کے مطابق بدھ کوسخت ترین حفاظتی انتظامات کے بیچ دسویں جماعت کے امتحانات کا آغاز ہوا ۔بدھ کی اعلیٰ صبح سے ہی شہر سرینگر اور وادی کے دیگر اضلاع میں دسویں جماعت میں زیر تعلیم بچوں نے اپنے والدین کے ہمراہ امتحانی مراکز کا رخ کیا ۔معلوم ہوا ہے کہ طلباء طالبات نے اعلیٰ صبح سے ہی امتحانی مراکز کا تک پہنچنے کی کوشش کی اور شدید سردی کی لہر کے باوجود امتحانات سے ایک گھنٹہ قبل ہی امتحانی مراکز تک پہنچ گئے تھے اور بے صبری سے اس گھڑی کے انتظار میں تھے کہ کب ان کا امتحان شروع ہو جائے گا ۔سٹی رپورٹر کے مطابق انتظامیہ نے امتحانات کو خوش اسلوبی کے ساتھ ابجام دینے اور کسی بھی امکانی گڑ بڑھ سے نمٹنے کیلئے امتحانی مراکز کے باہر سخت ترین سیکورٹی کے انتظامات کئے تھے ۔بتایا جاتا ہے کہ امتحانات کا آغاز جیسے ہی ہوا تو ہزاروں کی تعداد میں طلبہ نے شرکت کی ۔اسی دوران اسٹیٹ بورڈ ااف اسکول ایجوکیشن کی طرف سے جاری اعداد و شمار کے مطابق دسویں جماعت کے پہلے پرچے میں امتحانات کیلئے 99فیصد طلباء و طالبات نے حصہ لیا ۔ امتحانی عمل پر نظر گزر رکھنے کیلئے تمام ڈپٹی کمشنروں کے دفاتر میں کنٹرول روم ہمہ وقت متحرک رہا کریں گے تاکہ کسی بھی طرح کی صورتحال سے بر وقت نپٹا جاسکے ۔ اسی دوران معلوم ہوا ہے کہ پورے وادی کشمیر میں امتحانات بڑی خوش اسلوبی کے ساتھ منعقد ہوئے اور کسی جگہ سے کسی نا خوشگوار واقعہ کی کوئی اطلاع نہیں ہے ۔قابل ذکر ہے کہ امتحانات میں قریب ایک لاکھ6ہزار465 طلاب شرکت کریں گے،جن میں وادی کے 74 ہزار 465 اور جموںکے32ہزار طلاب شامل ہیں۔ بورڈ ااف اسکول ایجوکیشن نے ان امتحانات کیلئے1145امتحانی مراکز قائم کئے ہیں جن میں وادی میں814اور جموں میں331مراکز شامل ہیں۔ امتحانات بورڈ اآف اسکول ایجوکیشن کی نگرانی میں منعقد ہونگے۔ ان مراکز کی تعداد ا میں اس لئے اضافہ کیا گیا کیونکہ ماضی کے مقاملے میں ان مراکز میں نصف تعداد میں ہی طلاب کو حال میں بیٹھنے کی اجازت ہوگی۔اس بات کا پہلے ہی اعلان کیا گیا ہے کہ امتحانات کورونا معیاری عملیاتی طریقہ کار کے عین مطابق منعقد کرائے جائیں گے،جبکہ امتحانی مراکز میں جسمانی فاصلے کو عملاتے ہوئے سینٹی ٹائزر اور دیگر صفائی ستھرائی کا انتظام، جہاں ہوگا وہی امتحانی مرکز میں داخل ہونے سے قبل امیدواروں کی تھرمل جانچ بھی ہوگی۔ حکام کا کہنا ہے کہ انہوں نے احسن طریقے سے امتحانات منعقد کرنے کیلئے تمام تر انتظامات کئے ہیں۔

متعلقہ خبریں

تحریر: رشید پروین ؔسوپور سلسلہ روزو شب نقش گر حادثات
سلسلہ روزو شب اصل حیات و ممات
سلسلہ روزو شب تارِ حریر.

بہ گلشن بدرنی چھس پننہ تہ پننہ انجمن گلشن کلچرل فورم کشمیرکین تمام ارکانن ہندہ طرفہ کشیر ہندین سرکردہ تہ نمایندہ.

گزشتہ شب گلشن کلچرل فورم کشمیراور لسہ خان فدا فاؤنڈیشن نے مشترکہ طور سلسلہ قادریہ وفاضلی کے معروف صوفی بزرگ اور.

تحریر: حافظ میر ابراھیم سلفی عشرتی گھر کی محبت کا مزا بھول گئے
کھا کے لندن کی ہوا عہد وفا بھول گئے
قوم کے غم.

آج یہاں سنور کلی پورہ ماگام میں گلشن کلچرل فورم کشمیرکے اہتمام سے ایک ادبی نشست بزم فریاد منعقد ہوئ۔ کئ مہینوں کے.