ویڑیو

ای پیپر

اہم خبریں

آج یہاں سنور کلی پورہ ماگام میں گلشن کلچرل فورم کشمیرکے اہتمام سے ایک ادبی.

جدید دور میں گرمی دینے والے آلات کے باوجود بھی کانگڑی کی اہمیت برقرار

آٹھ زونوں سے لڑکوں اور لڑکیوں نے حصہ لیا
پلوامہ/ تنہا ایاز /
یوتھ سروسز.

•فلسفہ اقبالیاتس منز ہمت تہ جزبہ

   11 Views   |      |   Sunday, January, 24, 2021

•فلسفہ اقبالیاتس منز ہمت تہ جزبہ

تحریر:منتظر مومن وانی

کائناتکین تاریخی ورقن پھیور دتھ چھ انسان یمہ کتھ نش باخبر گژھان ز زندگی منز یمو تہ انسانو تھز کامیابی پراوتھ کائناتس اکہ نتہ بیہ اندء سوچھ کور تمن پیو ضرور ہول گنڈتھ تہ لونگوٹھ وٹتھ پرتھ مقابلس منز ہمیتک کمر گنڈن۔ییہ کتھ گژھ سوچہ صفحن پیٹھ واضح لفظو قلمبند کرن ز پرتھ چمنک بہار چھ آسان ہمت تہ جزبکس سائیس تل پلیومت۔یہوے ہمت تہ جزبہ چھ زندگی ہند دور منز کامیابی ہندن منزلن میٹھی کرناوان۔ہمت تہ جزبہ چھ پزپاٹھی اکہ تمہ تھزرچ دلیل یس زنہ روحچ زندگی گنزراونہ یوان چھ۔ہمت تہ جزبہ چھ سہ انسانی طاقت یمہ ستی کائناتن پرتھ ساتہ ناممکنس ممکناتک جامہ نالی تراو۔اکھ انسان چھ امے ہمت تہ جزبہ ستی عظمتک تہ بزرگی ہند مقام پراوان۔اکھ انسان ہمو تہ دوکھو تہ دولابو منز زندگی گزاران چھ تمس چھ ضرور بہ ضرور ہمتس تہ جزبس کام ہیتھ زندگی منز میچھر پادء پیوان کرن۔وارداتن ستی لڈتھ کھیونیہ چھ اصلی تہ حقیقی فلسفہ زندگی ہند نا۔تچھ بچھ کرتھ تہ ہمتک کمر گنڈتھ ییلہ انسان زندگی ہندس کونہ تہ مادانس منز قدم چھ تراوان ییہ کتھ چھ تمس باپتھ بامعنی ثابت گژھان زتمہ سندین قدمن برونہہ کنہ چھ لال تہ جواہرات سولبہ سولبہ موجود آسان ۔ہمت تہ جزبہ تھاون وول انسان چھ پرتھ موہمہ پننس مزازس تابع بناوان۔وقتک ہوا کیمہ انمانہ تہ آستن پننہ آنک باس دوان ہمت تہ جزبہ ستی چھ انسان ساری صورتحال یکدم موچھ منز قادہیکان کرتھ۔ہمت تہ جزبہ چھ تتھ احساس نا یمچ مستقل مزاجی کانسہ انسانس تہ تارکن منز جا چھ دوان۔امے فکر ہنز کل چھ اقبالؒ نوجوانن منز تراوان۔ییہ صاحب قلم چھ یژھان ز زندگی ییتہ اکہ مقابلک نائی چھ تتہ چھ گژھ جوان اتھ مقابلس منز ہمتک تہ جزبک مزاز پانناوتھ ہمیشہ لڈتھ کھیون۔اقبالؒ چھ فلسفکین زاوجارن کام ہیتھ جوانس فکر تاران ز زندگی چھنہ تیژھا سہل ییوتاہ ژ سمجھان چکھ مگر آسان تہ چھ ورایہہ ییلہ ہمتک تہ جزبک کمر سہ گنڈ۔سوکھ تہ دوکھ چھ زندگی ہند ز بوتھ امن دوشونی بتھن ہند دیدار کرن چھ پرتھ ذی حیس انسانس باپتھ لازم۔ہمت تہ جزبکس دامنس تھپ کرتھ ہیکہ انسان ون والتھ۔یہوی چھ فکر اقبال تہ نوجوانن باپتھ۔سہ چھ جوانس شاہین صفت ہیو وچھن پژھان اوے چھ سہ امس ہمت تہ جزبہ ہیو مدراحساس پانناونس پیٹھ زور دوان ۔مسلسل جدوجہد ستی چھ انسان کائناتسکس وجودس سام ہیکان ہیتھ۔

   ؎آتی تھی کوہ سے صدا راز حیات ہے سکون

کہتا تھا مور ناتواں لطف خرام اور ہے (بانگ درا)

  کوہ پیٹھ آسی ییہ آواز یوان ز اکسی جایہ بہیتھ روزن چھ زندگی ہند راز ییلہ کہ کمزور ریہ ہند آلو چھ ز پکنس تہ پھیرنس تھورنس چھ اکھ الگی حض۔کوہ چھنہ ہیکان ہلتھ ییہ چھنہ کانہہ زندگی ییلہ زنہ ریہ مسلسل پکان چھ روزان۔مطلب چھ مسلسل پکان تہ جدوجہد چھ اصلی تہ حقیقی زندگی۔

اقبالؒ چھ ویژھان ز قومس اگر تمہ جوان باگہ ین یمہ باہمت تہ جزبہ حقیقی نش باخبر آسن تمہ قومچ نائو واتہ ضرور منزلس ییہ زند دل فلسفی چھ واریہن احساسن ہند ژھریر جوانن منز محسوس کران ییہ سہ لفظ تراشی کرتھ ویژھناوان چھ۔

   ؎عہد حاضر کی ہوا راس نہیں ہے اسکو

اپنے نقصان کا احساس نہیں ہے اسکو ( بانگ درا)

   یتھ قومس چھنہ ییہ فضا موافق تہ ویہ ون تہ امن چھنہ پننہ نقصانک کانہہ تہ احساس یتہ دورس منز یمہ ہمتچ تہ جزبچ ضرورت امن چھ تمہ نش چھ یمہ محروم تہ بیہ چکھ نہ احساس تہ امہ کتھ ہند۔

چونکہ ییہ کتھ چھ پرتھ مزازس گوڈے فکر ترمژ ز زندگی چھ اکھ لڑائی ییہ لڑائی چھ انسان تیلے زینان ییلہ تمس ہمت تہ جزبہ ہش شمشیر موچھ منز بند آسہ امہ ورائی ہیکہ نہ انسان لوکٹہ کھوت لوکٹہءمنزلک تہ بوتھ وچتھ۔اقبالؒ تہ چھ یمنے کتھن واش کڈتھ جوانن بار بار امہ احساسچ ژینہ ون دوان۔

    ؎چاہیے تو بدل ڈالے بہت چمنستان کی

یہ ہستی دانا ہے،بینا ہے،توانا ہے ( بانگ درا)

امس انسانس چھ سہ قوت اگر سہ یژھ سہ ہیکہ باغک انہارے بدلاوتھ تکیاز انسان چھ وجودنے گاٹل تہ گاش دار تہ بیہ چھ زور آور۔قدرتکیو بخشمتیو امو صفتو کنی ہیکہ ییہ انسان کائناتس منز انقلاب آنتھ۔

اقبالؒ چھ قومس ییہ فکر تاران ز کائناتچہ ترکرء ہند پرمانہ چھ توتامت کھوٹ یوتام نہ ہمتک تہ جزبک خون کائناتچن رگن منذ پھیران آسہ ۔سہ چھ پوت کالکین لوکن ہمتک تہ جزبک مثال قرار دوان۔

؎رہزن ہمت ہوا ذوق تن آسانی ترا

بحر تھا صحرا میں تو گلشن میں مثل جو ہوا ( بانگ درا)

   اے مسلمانہ ییہ چون راحت طلبی ہند شوق چھ چانہ ہمتک دشمن ۔ییلہ ژ سیکلیس منز اوسک نہ اوسکھ سمندر ییلہ پھولونس باغس منز آکھ ژ سپدکھ اکھ کولہ ہش مثال ۔یوت کالہ آسہ مسلمان باڈودار زندگی بسر کران ہمت تہ جزبہ ستی آسی تمہ لبریز۔

زندگی چھنہ فقط کامیابی ہند نائو بلکہ چھ ناکامی تہ کونہ وز انسانس پننس زالس منز ولان۔یتھ کنتھ کامیابی ہند تصور اکھ زند حقیقت چھ تتھے کنتھ چھ زندگی منز ناکامی تہ اکھ ضابط بند اصول یتھ اصولس برونہہ کنہ نہ کانہہ کنہ ڈول ہیکہ دتھ ۔ناکامی منز پنن پان زندگی ہنز پٹرء پیٹھ الگ کرن چھنہ کانسہ فہیم تہ باشعور انسان سنز زندگی ہنز دلیل بلکہ چھ پرتھ ناکامی ہندس پڑاوس پیٹھ انسانس ہمتک کمر گنڈن تہ پننس زند جزبس تسلسل بخشن۔پز کتھ چھ یہے ز کامیابی ہندس انتہس پیٹھ واتن والی لوکھ چھ کہیا ناکامیو منز گزران مگر تمہ چھ مثبت سوچس تہ ہمتکس دامنس تھپ کرتھ وقتچن اچھن منز اچھ رلاوتھ برونہہ پکان۔اکس فلسفی نیپولین سند قول تہ چھ اتھ حقیقتس ڈکھ کران۔”کامیابی چھ مستقل مزاز لوکنےء ہند حصہ آسان“اتھ سارسی سماجی نفسیاتس چھ اقبالؒ سنجید تخیل کہ سببہ احسن طریقہ زیو دوان۔

؎آشکارا ہے میری آنکھوں میں یہ اسرار حیات

کہہ نہیں سکتے مجھے نومید پیکار حیات ( بانگ درا)

  میانن اچھن برونہہ کنہ چھ زندگی ہند ساری راز نن اوے ہیکو نہ ییہ ونتھ ز بہ چھس زندگی ہنز لڑائی نش ناوومید۔مسلمانس نش چھنہ حقیقی زندگی ییہ ز سہ روز عملہ نش لوب یا بے حیس بلکہ تمس پیٹھ چھ ییہ لازم ز سہ روز تچھ بچھ تہ عمل کرنس منز آوور تہ شیرء پنن دنیا تہ آخرچہ آبادی خاطر کرء سامان تیار۔اقبالؒ چھ یتھ فلسفس گینہ کڈان زہمت تہ جزبہ چھ اکھ سہ مولل جامہ یس انسانس کنہ تہ عمرء منز بزرگی تہ بڑائی بخشان چھ۔چونکہ ناکامی ہند شکار بنتھ چھ پردء کیا پنن تام پامہ تہ ٹسنہ کران مگر عظمت چھ تیلے زاین لبان ییلہ انسان اتن دورء جگر کرتھ ہمتکس دامنس چھ تھپ کران۔

؎پختہ تر ہے گردش پہیم سے جام زندگی

ہے یہی اے بے خبر راز دوام زندگی (بانگ درا)

  یاد تھائوزندگی ہند جام چھ دراصل مسلسل پھیرنہ ستی پختہ تہ در گژھان۔یعنی حقیقی زندگی چھ لگاتار تچھ بچھ تہ عملہ ستی حاصل گژھان وگوو ژ چکھ نہ امہ زندگی ہند راز نشہ باخبر۔

   زندگی منز کنہ تہ ساتہ کانہہ مقصد حاصل کران کران اگر ناکامی ہند بتھ تہ پیہ وچھن تو پتہ تہ گژھنہ سہ مقصد اتھ منز تراون۔بلکہ ہمت تہ جزبس کام ہیتھ گژھ مشکلاتن برونہہ اسہ ون ہونجہ پنن پان پیش کرن۔کتھ چھ حق تہ پوز کامیابی تہ ناکامی چھ اکے سکک ز بوتھ۔

    ؎خام ہے جب تک تو ہے مٹی کا اک انبار تو

پختہ ہوجائے تو ہے شمشیر بے زنہار زندگی

  توتام چکھ ژ فقط اکھ میژ ڈھیر یوتام ژ کمزور تہ خام چھکھ ییلہ ژ میژ منز پختگی پادء گژھ تیلہ بنکھ اکھ بے زنہارتلوار۔مصیبتن تہ پریشانین کھوژن ورائے تمن ستی مقابلہ کرنہ ستی چھ زندگی پختہ گژھان۔

؎گزر اوقات کرلیتا ہے یہ کوہ وبیاباں میں

کہ شاہیں کے لیے ذلت ہے کارآشیاں بندی (بال جبریل)

شاہین ہیوس ووڈونس جانوارس باپتھ اول ییرن چھ باعث ذلت اوے چھ سہ کوہن تہ شنیاہن منز زندگی گزاران ۔سہ چھ پننہ ہمتہ سببہ پنن زندگی اتھے کنی پاران۔

اقبالؒ چھ زندگی ہندس پرتھ مادانس منز ہمتس تہ جزبس اکھ روح مانان اوے چھ سہ اتھی فلسفس بار بار دائراوان۔اقبالؒ چھ پانہ تہ امے کتھ ہنز یقین دہانی کران۔

؎زیارت گاہ اہل عزم وہمت ہےلحد میری

کہ خاک راہ کو بتایا میں نے رازالوندی (بال جبریل)

میانی قبر چھ ہمت تہ جزبہ تھاون والین باپتھ اکھ زیارت گاہ تکیاز وتن ہنز لژھء تہ وون میہ پہاڑ بننک راز۔یعنے میانیو آلوو ستی پانناو کمزور قومو تہ انداز تہ بیہ گرکھ مستحکم گژھنک سامان۔اوے چھ ہمت تہ جزبہ والی لوکھ میانہ قبرء پیٹھ یتھ دعائے خار کران۔

پرتھ قومس چھ تمن افرادن ہنز ضرورت یمہ زند دلی تہ تھد ہمتک مالک آسن اد ہیکہ سہ قوم کائناتس منز جہار لبتھ۔زند دلی تہ ہمت چھ پرتھ کانسہ فردس کائناتکیو سرو نش واقف کران۔

؎دل اگر خاک میں زند بیدار ہو

تیری نگاہ توڈ دے آئینہ مہروماہ (بال جبرل)

اگر چانس جسمس منز زند تہ بیدار دل آسہ تیلہ کرء چانی نظر آفتابس تہ زونہ ہندس تیشس پارء پار۔حقیقی جزبن ہند تیتھ گاش پیہ تھنہ یتھ برونہہ کنہ آفتاب تہ زونہ گاش شرمند گژھ۔

   شخصیت تہ بزرگی پراون والین یمی چیزن ییہ تھزر تہ رتبہ بخش سہ چھ فقط یہی ہمت تہ جزبہ یمہ ستی تمو پرتھ طفانس برونہہ کنہ پنن پان کامیابی سان سرءکور ۔ہمت تہ جزبے چھ سہ چیز یمہ ستی کامیاب لوکو منزل زیون تہ تہند نائے گوو سونہ اچھرو تاریخی کاکدن پیٹھ قلمبند تہ وومر وومران چھ پرتھ نفرس تہند نائے ورد زبان۔

؎ظلام بحر میں کھو کر سنبھل جا

تڑپ کر پیچ کھاکھاکربدل جا

نہیں ساحل تری قسمت میں اے موج

ابھر کر جس طرف چاہیے نکل جا (بال جبریل)

  اے لہرو!سدرکس گٹہ زلیس منز گاب گژھت سنبھلیو تہہ روزیوتڑپان تہ وولگتھن کھیتھ تہ سنبھالیو پنن پان تکیاز سمندر ڈنڈء چھنہ تہند مقدرس اوے روزیو ووتلان یمہ طرفہ دل ویژھیو پکان روزیو تکیاز سمندر چھ سیٹھاہ وسعت تھاوان لہرن ہند لفظ چھ اشارءجوانمرد انہ گوٹ مصیبت تہ مشکلن کن یعنے دلیر تہ باہمت انسان چھ مصائیبو تہ مشکلاتو نش بے خوف روزتھ مسلسل پننہ کامہ کن زن تھاوان۔

اقبالؒ سنز سنجیدگی چھ یژھا پختہ ز ییہ صاحب دل چھ کائیناتکیس پرتھ چیزک پاغام سمجھتھ ہیکان ۔کس چیز کیمہ اکتھ ہند پاغام چھ دوان ییہ قلندر چھ تتھ سرس محرم گژھنک فن تھاوان۔

؎مجھے ڈرا نہیں سکتی فضا کی تاریکی

مری سرشت میں ہے پاکی ودرخشانی

تواےمسافرشب!خودچراغ بن اپنا

کراپنی رات کوداغ جگر سےنورانی (بال جبریل)

  میہ یعنے تارکس ہیکہ نہ اوند پکچ گٹہ زلہ کھوژ ناوتھ تکیاز پاکیزگی تہ پریزلن چھ میانہ فطرتک حصہ ۔میانہ امہ نپہ نپہ کرنہ ستی چھنہ میہ راژ ہندس انہ گٹس منز پکنس دکت یوان۔اوے اے راژ ہند انہ گٹس منز پکن والیہ ژ تہ بن پانس باپتھ پانہ ژونگ۔زندگی منزپیہ تن کاتہن تہ خونین وارداتن ہند بتھ وچھن تمہ پتہ تہ چھ ہمتس تہ جزبس توژھ بخشتھ در مزاز پانناون آسان۔زندگی ہندس حسین تہ مارموندلائحہ عملس منزیس گوڈ کتھ جوانس درج آسہ کرمژ سہ گژھ یہے ہمت تہ جزبہ آسن ادے ہیکہ سہ کاروان زندگی منز بے پھریکہ قدم تراوتھ۔

؎محبت مجھے ان جوانوں سے ہے

ستاروں پہ جو ڈالتے ہیں کمند (بال جبریل)

میہ چھ پنن تمن جوانن ہنز سٹھاہ مائے یمہ وولمنن کھستھ تارکن تام واتتھ تمن پیٹھ جائے چھ بناوان۔

  ماجہ ہنز کھونہ منز تھنہ پینہ پتہ ییلہ انسان زندگی ہندس سفرس منز پرتھ کاروانس لرلور چھ پکان تمس چھ یتھ اصولس پیوان ضرور ایمان انن ززندگی منز چھ نفع تہ گاٹہ زحقیقژ یمن برونہہ سرخم کرن جائز چھ مگر شرط چھ یہے کتھ ز انسان تھاوو دونونی معملن منز ہمتس تہ جزبس پیٹھ بھروسہ تہ کنہ تہ بانبر ہند سپدنہ شکار۔

؎ہے سلسلہ احوال کا ہر لحظ دگرگوں

اے سالک رہ فکرنہ کرسودزیاں کا (ضرب کلیم)

یتھ دنہیس منز چھ پرتھ ژہس حالاتن پھیر بدل سپدان۔اوے اے وتہ پکن والیہ مسافر ژمہ کر نفع تہ گاٹچ فکر اتھ زنس منز مہ پیہ ژ ارادن ہنز توژھ تھاوتھ پکھ ژ کامیابی ہندس منزلس کن وتہ ین واریہہ ٹھرء بغار کھوژنہ پکھ ژ برونہہ کن۔

کھونہ وٹ کھوڈ کھنہء ستی چھ انسان آسمانی دنیہک سال کران۔مشکلاتن بتھ سینہ دین تہ ہمتس کام ہینہ ستی چھ کامیابی ہند ساری ژانگی شولہ ماران۔

؎جرات ہےنموکی تو فضاتنگ نہیں ہے

اے مرد خدا ملک خدا تنگ نہیں ہے (ضرب کلیم)

اے مرد خدائی اگر ژ منز پبھنک ہمت تہ جرت چھ تیلہ چھ ییہ اوند پوک کنہ تہ رنگی تنگ ۔برونہہ پکھ تچھ بچھس تہ عملہ ہیہ کام تہ پننہ باپت کر سامان پاد خدئی سند ملک ییہ کائینات چھنہ تنگ۔ ہمت تہ جزبس ہیہ بھرپورکام پتہ پوشہ راو خدائیس۔اکھ انسان ییلہ زندگی ہندس آسمانس منز وڈو تراو سہ گژھ ہمتک تہ جزبک جامہ ولتھ آسن۔تکیاز سہ ہیکہ کنہ وز تہ چمبھن تہ بالن چھاونہ یتھ تمہ وز گژھنہ تمہ سندس مزازس منز کانہہ تہ کمزوری یا سستی ین۔

؎شاہین کبھی پرواز سے تھک کر نہیں گرتا

    پر دم ہےاگر تو تو نہیں خطرہ افتاد (ضرب کلیم)

شاہین چھنہ وڈو کران کران زنہہ تہ تھکان ۔اگر ژ تہ بغار تھکاوٹ برونہہ پککھ ژ پیکھ نہ زنہہ تہ وسی یتھ کنی شاہین مسلسل وڈو کران چھ روزان امہ ستی چھ ییہ عظمتک مالک اگر ژ تہ یتھے پاٹھی بہمت بنتھ برونہہ پکنک مزاز پانناوکھ تیلہ پراو چانی زندگی ضرور عظمت تہ تھزر۔آدمؑ ییلہ رب کائیناتن اکہ دانہ کھینہ کہ خطا باپت جنتہ منز نیبر کوڈ تمی کور تمہ وز سیٹھاہ ہمت ت جزبک اظہار تمی ہار نہ توتام ہمت یوتام نہ ربن تمہ سندس توبس قبولیتچ مہر تراو۔

؎ملے گا منزل مقصود کا اسی کو چراغ

اندھیری شب میں ہے چیتے کی آنکھ جس کا چراغ (ضرب کلیم)

سہ انسان لبہ پننہ منزلک پے یس گٹہ زلیس منز سہہ سنز اچھ پنن ژونگ بناوء۔سہہ اچھ چھ گٹہ زلیس منز زوتان آسان۔یمہ دورء ژونگ چھ باسان کتھ چھ صاف ییلہ انسان زندگی منز مصیبتن تہ ٹھرن لتھ دتھ تہ بے پروائی سپدتھ منزلس کن پکان روز امہ ستی گژھ تمہ سنز ہمت تہ جزبہ سیٹھاہ دور۔

ہر کانہہ سہ فلسفہ یس ہمت تہ جزبہ کہ حوالہ جرح کران چھ تتھ برونہہ کنہ چھ اقبالیاتچ فکر ہمت تہ جزبکس معملس منز امامتک تھزر تھاوان۔اتھ فلسفس منز چھ تتھ سارسی رازس پرد تلنہ آمت یس ونہ تہ سنجیدءنظرن برونہہ کنہ ژھایہ چھ۔

؎اِدھر نہ دیکھ اُدھر دیکھ اے جوان عزیز

     بلند زور دروں سے ہوا ہے فوارہ (ضرب کلیم)

اے ٹاٹھ نوجوانہ!اوکن کولہ کن مہ وچھ یتھ فوارس کن تہ وچھ یس اندرمہ جزبہ تہ طاقتہ ستی وولہ منن چگ کھسان۔اتہ چھ اشار نوجوانس تعلیمہ کن زپانس منز کر ہمت تہ طاقت پاد۔جزبہ تہ ہمت پادء کرتھ ہیکھکھ ژ عظمت تہ سامان لبتھ۔

زندگی ہندس شوب دار تہ عظیم بننس پتہ کنہ چھ یہے سِر کھٹتھ ز ہمت تہ جزبہ چھ پرتھ خیالس آے بخشان ۔زندگی ہند میچھر یتہ اکھ پوز کتھ چھ تتہ گژھ مزازس نلہ وٹھ ویتراونک تہ بتر آسن ۔تیلہ ہیکہ نہ زندگی ہند دورِمنز کانہہ تہ مہم انسانس کوٹھ ویسراوتھ۔

؎مردِبے حوصلہ کرتا ہے زمانے کا گلہ

بندہ حر کے لیے نشتر تقدیر ہے نوش (ضرب کلیم )

یمس انسانس نہ ہمت تہ غارتھ موجود چھ سہ چھ زمانس پرتھ وز گرائی کران روزان مطلب سہ چھنہ ہمتس تہ عملہ کام ہیوان صرف چھ مہمہ گراو گراو کران۔امہ برعکس یس آزاد مرد چھ تمہ باپت چھ مقدرک نشتر سہ تروکھ تہ زنہ مانچھ یعنے تمہ چھ زندگی ہند پرتھ کانہہ مصیبت تہ دوکھ ڈیکہ مژرتھ برداشت کران تمہ چھ ہمت ہارنہ ورائے پننہ کامہ ستی مصروف روزان۔

؎نہیں ہنگامہ پیکار کے لایق وہ جواں

جو ہوا نالہ مرغانِ سحر سے مدہوش (ضرب کلیم)

سہ جوان چھنہ زنہہ تہ تیشہ ہتن جنگن لائق یس صبحائی ژرین ہند پچ پچ بوزتھے پنن ہیس تہ ہوش راوراوء مطلب تمس منز چھنہ سہ ہمت تہ غارتھی یمہ ستہ سہ زندگی ہنز لڑائی منز برونہہ پکہ یا یمہ ستی سہ امکس مقابلس باپتھ آماد گژھ۔اکھ انسان ییلہ اصولن ہند پاسدار بنتھ ہمتس تہ جزبس کام چھ ہیوان کائناتک کانہہ تہ منزل چھنہ تیلہ تمہ سند باپتھ تیلہ کانہہ بڈ کتھا۔یس انسان ہمتس تہ جزبس کام چھ ہیوان دست قدرت تہ چھ آسان تمس پرتھ قدرت باپتھ شاملِ حال۔

؎تواپنی سرنوشت اب اپنے قلم سے لکھ

خالی رکھی ہے خامہ حق نے تیری جبیں                                     (ضرب کلیم)

اے انسانہ !پنن تقدیر لیکھ ژ پانہ پننہ قلمہ ستی ۔خداین چھ چون ڈیکہ صاف کاکز تھومت مطلب انسان یوتاہ جزبس تہ ہمتس کام ہیہ تیوت پرزلیہ تمہ سند مقدر بہ الفاظ دیگر ۔؎یہ نیلگوں فضا جسے کہتے ہیں آسمان

ہمت ہو پر کشش تو حقیقت میں کچھ نہیں                                             (ضرب کلیم)

ییہ نیول فضا یتھ زن آسمان چھ ناٶ آمت دنہ۔اگرچہ ییہ سیٹھاہ تھزرس چھ وگووانسان اگر ہمتچ وڈو تراوء تیلہ چھنہ ییہ تھزر کنہ تہ حقیقتک مالک تہ نہ چھ اتھ کانہہ حثیت۔صاحب ہمت تہ حوصلس باپت چھنہ بڑ بڑ مشکل تہ روکاوٹہء کانہہ حثیت تھاوان۔سہ چھ امو پیٹھی یا ٹھرپھٹر پھٹر برونہہ کن مسلسل پکان روزان۔

؎بالاے سر رہا تو ہے نام اس کا آسماں

     زیرِپر آگیا تویہی آسماں زمیں                                      (ضرب کلیم)

یوتام ییہ کلس پیٹھ چھ روزان توتام چھ اتھ آسمان ناٶ ییلہ یہ وڈونن پرن تل چھ یوان تیلہ چھ اتھ زمین پیوان ناٶ۔ہمتس تہ جزبس برونہہ کنہ چھنہ آسمانک تھزرکانہہ مانہ تھاوان۔

ہانکلہ ژٹ ژٹ برونہہ کن پکتھ ہمتچ تہ جزبچ تلوار اتھس منز رٹتھ ییلہ انسان کاروان زندگی ہند مسافر بننان چھ پرتھ کانہہ منزل چھ اورے آلو لایان۔باہمت انسانس چھ تمام منزل قدم بوسی کران۔

؎خدا آں ملتے را سروری داد

کہ تقدیرش بدست خویش بنوشت

بہ آں ملت سرورکارےندارد

کہ دہقانش براۓ دیگراں کشت                                  (ارمغاں حجاز)

خداین چھ صرف تتھی قومس بادشاہی تہ بزرگی عنایت کرمژ یمو پنن تقدیر پننو اتھو لیوکھ مطلب ہمت تہ تچھ بچھ کرنہ ستی پروکھ مقام۔خداۓ چھنہ تتھس قومس ستی کانہہ رشتہ تھاوان یمیک کومیل بیہ سند کھاتر جھکھان آسن۔محنت آسہ سہ قوم کران تہ فاید آسہ بادشاہ تلان۔

ماجہ ہنز کوچھ پیٹھ قبر بٹھس تام چھ اکس انسان کہیا مصایبو منز گزرن پیوان ہمت تہ جزبہ چھ تمہ سنز زندگی منز میچھر تہ حسن پاد کران۔سہ چھ پرتھ مقابلس ستی لڈتھ کھیوان۔تاریخی ورقن پھیر دتھ چھ ننان زِ کایناتکین کامیاب لوکن ہنزکامیابی ہند راز چھ اتی ہمتکین تہ جزبکین پردن ژھایہ۔

؎نہنگے بچہ خود راچہ خوش گفت

بہ دین ما حرام آمد کرانہ

بہ موج آویز واز ساحل بہ پرہیز

ہمت دریاست ما را آشیانہ                                (ارمغان حجاز)

اکی مگر مچھ وون پننس بچس بڈ ماری منز کتھ سانس دنہیس منز چھ ساحل سمندر دوند حرام یعنی دریاٶ دندس پیٹھ آرام کرن چھ سانہ باپت حرام۔اوے روز ژ لہرن ستی لڑان تہ ساحلہ نش روز دور تکیاز سمندری چھ سانی ڈھیر جاۓ۔مطلب چھ باہمت مرد چھنہ مصیبتن ہندس ذالس منز ہینہ یوان بلکہ چھ سہ مصیبتن ستی لڈتھ کھیون ہشناوان۔

؎تودردریا نہ ای اودربرتست

بہ طوفان درفتادن جوہرتست

چویک دم از تلاطم ہا بیا سود

ہمیں دریاۓ تو غار تست                                        (ارمغان حجاز)

ژ چکھ نہ سمندرس منز بلکہ سمندری چھ چانس قبضس منز تہ طوفانس ستی لڈنیہ چھ چانہ باپت لال زینن ۔یعنی انسان سنز بنیادی خوبی چھ یہے ز سہ چھ مشکلاتو نشہ کھوژنہ بغار تمن ستی لڈتھ کھیوان۔ییلہ نہ سمندرس منز زنہہ طوفان چھ ووتھان یہوی سمندر چھ تباہی کران۔مسلمان چھنہ دنیا باپت بلکہ دنیا چھ مسلمانن باپت پاد آمت کرنہ۔اگر یتہ سہ مشکلاتو نشہ کھژن ہیہ تیلہ بنہ ہیہ دنیا تمس باپتھ عزاب۔

دستور زندگی ہند راز چھ اصلی یتھ کتھ منز بستھ ز مرنہ برونٹھے گژھنہ اکھ انسان مرن۔بزدلی ہنز ژادر گژھ لتہ مونجہ کرتھ ہمتکس آسمانس تل کھولہ ڈولہ پھیرن تھورن۔بزدلی چھ اکھ عاب یس عاب انسانس پرتھ پڈاوس پیٹھ زٹ چھ کران ۔بزدلی ستی چھ انسانی روح مرد یوان گنزراونہ تہ زندگی ہند حض چھنہ انسان کنتہ صورتس منز ژینان۔

؎بساکس اندہ فردا کشید ند

کہ دی مردند وفردا راندیدند

خنک مرداں کہ در دامانِ امروز

ہزاراں تازہ تر ہنگامہ چیدند                                        (ارمغان حجاز)

واریہہ انسان چھ تتھی یمہ ینہ والین حالاتن تہ مصائبن باپت وقتہ برونہے پریشان چھ گژھان۔اتھ کنی چھ تمہ ہمت تہ عملہ نشہ موچھ روزتھ اکہ اند پوت کالس منز ہمتس تہ جزبس کام نہ ہیتھ ممت آسان وچھنہ تمہ ینہ والس کالس منز تہ کانہہ فایدہ یا منزل ہیکان زینتھ۔

؎نگرید مرداز رنج وغم ودرد

زدوراں کم نشیند بردلش گرد

قیاس اورا مکن از گریہ خویش

کہ ہست ازسوزومستی گریہ مرد                                      (ارمغان حجاز)

باہمت تہ جبروت وول انسان چھنہ دنیاوی دوکھو تہ غمو ستی زنہہ تہ اوش تراوان تمہ سندس دلس چھنہ وقتکین حالاتن ہنزلژھ پیوان سہ چھنہ اوکنی زیاد زن دیوان۔مرد مومن سند سوری زن چھ معرفت الہیس کنی آسان ۔اتھن لوکن ہند وودن چھنہ دنیادارن ہند وونک پاٹھی آسان یتھ لوکھ چھ اوش تراوان فقط حب الہی کہ مستی ہند وجہ۔ہمت تہ جزبہ چھ انسانی روحک اکھ سہ غذایس اتھ جسمس تہ روحس پرتھ وز لوبہ ون تہ مار موند چھ تھاوان ۔پرتھ کانہہ آش تہ پژھ چھ توتام نیپتر گنزراونہ یوان یوتام نہ تتھ ہمت تہ جزبہ ہیو مدر احساس ڈکھس آسہ۔علامہ اقبالؒ چھ یہے احساس باربار دائراوتھ قومس تہ جوانن فکر تاران ز پرتھ تارکھ موچھ منز قاد کرن چھ ممکن تہ پرھ منزل پانس تابع بناون چھ سہل فقط ییلہ ہمت تہ جزبہ انسانی وجودس ستی ستی آسہ۔اللہ تعالی تراون آسہ پرتھ مہمہ منز ہمتک جامہ نالی۔آمین

بہرام پورہ کنرر بارہمولہ

رابط:9797217232

متعلقہ خبریں

تحریر:صوفی یوسف وادی کشمیر سے تعلق رکھنے والے نامورسینئر صحافی،قلمکار اور روزنامہ وادی کشمیر کے مدیر اعلیٰ غلام.

’’گری ہے جس پہ کل بجلی وہ میرا آشیاں کیوں ہو‘‘ تحریر: رشید پروین ؔ سوپور   اس سے پہلے کہ اصل موضوع پر آجاؤں.

افسانہ نگار: رئیس احمد کمار
بری گام قاضی گنڈ وہ صبح سے شام تک فون پہ لگی رہتی تھی ۔ میکے والوں سے گھنٹوں فون پر.

سید رشید جوہر …ونیل قاضی آباد ضلع کپوارہ میرے شہر میں صاف دِل کوئی بشر نہیں
اس بھیڑ میں کوئی بھی میرا ہمسفر.

افسانہ نگار:ڈاکتر نذیر مشتاق شبانہ نے کھڑکی سے باہر دیکھا ہلکی ہلکی بوندا باندی شروع ہوچکی تھی اس نے کھڑکی کے پٹ.