ویڑیو

ای پیپر

اہم خبریں

آج یہاں سنور کلی پورہ ماگام میں گلشن کلچرل فورم کشمیرکے اہتمام سے ایک ادبی.

جدید دور میں گرمی دینے والے آلات کے باوجود بھی کانگڑی کی اہمیت برقرار

آٹھ زونوں سے لڑکوں اور لڑکیوں نے حصہ لیا
پلوامہ/ تنہا ایاز /
یوتھ سروسز.

یونین کبنٹ میں جموں کشمیر آفیشل لنگویج بل منظور

   193 Views   |      |   Tuesday, January, 19, 2021

اردو ، کشمیر ، ڈوگری ، ہندو اور انگریزی زبانیں سرکاری قرار
سرینگر /02ستمبر/// یوٹی جموں کشمیر کیلئے سرکاری زبان کے حوالے سے یونین کیبنٹ نے آج آفیشل بل 2020کو منظوری دی ہے جس
میں اردو سمیت دیگر پانچ زبانیں سرکاری قراردی گئی ہے ۔ کرنٹ نیوز آف انڈیا کے مطابق جموں کشمیر کو مرکزی زیر انتظام کشمیر بننے کے بعد پہلی بار جموں کشمیر کیلئے سرکاری زبان کی بل کو پارلیمنٹ میں پیش کرکے یونین کیبنٹ نے جموں کشمیر لنگویجز بل 2020کو منظوری دی ۔ اس میں اردو سمیت پانچ زبانیں شامل ہیں جن میں اردو ، کشمیری، ہندی ، انگریزی اور ڈوگری ہے ۔ زرائع کے مطابق یہ اقدام یونین سرکاری نے عوامی مطالبات کے پیش نظر اُٹھایا ہے ۔ یاد رہے کہ گزشتہ برس 5اگست کو جموں کشمیر کی خصوصی حیثیت کو ختم کرکیاس کو مرکزی زیر انتظام علاقہ قراردیا گیا تھا جبکہ ریاست جموں کشمیر سے لداخ کو الگ کرکے اس کو بھی مرکزی زیر انتظام علاقہ قراردیا گیا ۔ اس اقدام کے بعد جمویونین کبنٹ میں جموں کشمیر آفیشل لنگویج بل منظور
اردو ، کشمیر ، ڈوگری ، ہندو اور انگریزی زبانیں سرکاری قرار
سرینگر /02ستمبر/سی این آئی// یوٹی جموں کشمیر کیلئے سرکاری زبان کے حوالے سے یونین کیبنٹ نے آج آفیشل بل 2020کو منظوری دی ہے جس میں اردو سمیت دیگر پانچ زبانیں سرکاری قراردی گئی ہے ۔ کرنٹ نیوز آف انڈیا کے مطابق جموں کشمیر کو مرکزی زیر انتظام کشمیر بننے کے بعد پہلی بار جموں کشمیر کیلئے سرکاری زبان کی بل کو پارلیمنٹ میں پیش کرکے یونین کیبنٹ نے جموں کشمیر لنگویجز بل 2020کو منظوری دی ۔ اس میں اردو سمیت پانچ زبانیں شامل ہیں جن میں اردو ، کشمیری، ہندی ، انگریزی اور ڈوگری ہے ۔ زرائع کے مطابق یہ اقدام یونین سرکاری نے عوامی مطالبات کے پیش نظر اُٹھایا ہے ۔ یاد رہے کہ گزشتہ برس 5اگست کو جموں کشمیر کی خصوصی حیثیت کو ختم کرکیاس کو مرکزی زیر انتظام علاقہ قراردیا گیا تھا جبکہ ریاست جموں کشمیر سے لداخ کو الگ کرکے اس کو بھی مرکزی زیر انتظام علاقہ قراردیا گیا ۔ اس اقدام کے بعد جموں کشمیر میں یہ تاثر تھا کہ اب جموں کشمیر میں اردو اور کشمیری زبان کو سرکاری زبان سے ختم کیا جائے گا اور یہاں پر اب ہندی اور انگریزی ہی سرکاری زبانیں ہوں گی ۔ ں کشمیر میں یہ تاثر تھا کہ اب جموں کشمیر میں اردو اور کشمیری زبان کو سرکاری زبان سے ختم کیا جائے گا اور یہاں پر اب ہندی اور انگریزی ہی سرکاری زبانیں ہوں گی ۔

متعلقہ خبریں

تحریر: رشید پروین ؔسوپور سلسلہ روزو شب نقش گر حادثات
سلسلہ روزو شب اصل حیات و ممات
سلسلہ روزو شب تارِ حریر.

بہ گلشن بدرنی چھس پننہ تہ پننہ انجمن گلشن کلچرل فورم کشمیرکین تمام ارکانن ہندہ طرفہ کشیر ہندین سرکردہ تہ نمایندہ.

گزشتہ شب گلشن کلچرل فورم کشمیراور لسہ خان فدا فاؤنڈیشن نے مشترکہ طور سلسلہ قادریہ وفاضلی کے معروف صوفی بزرگ اور.

تحریر: حافظ میر ابراھیم سلفی عشرتی گھر کی محبت کا مزا بھول گئے
کھا کے لندن کی ہوا عہد وفا بھول گئے
قوم کے غم.

آج یہاں سنور کلی پورہ ماگام میں گلشن کلچرل فورم کشمیرکے اہتمام سے ایک ادبی نشست بزم فریاد منعقد ہوئ۔ کئ مہینوں کے.