ویڑیو

ای پیپر

اہم خبریں

پلوامہ جم خانہ نے شوپیان کو شکست دی، میچ دیکھنے کیلئے پورا ضلع اُمڈ آیا پلوامہ.

شاذونادرہی ملکی وغیرملکی سیاحوں کی آمد ،مقامی سیلانی ہی شکارہ والوں کی.

کارخانوں کو جدید ساز و سامان سے لیس کرنے کیلئے رعایت کا مطالبہ سرینگر؍22،ستمبر.

کھلی دھوپ کے بیچ تعلیمی سرگرمیاںبحال

رنگ برنگی وردیوں میں ملبوس بچوں کے دلفریب مناظر

   339 Views   |      |   Friday, September, 25, 2020

سرینگر// کئی ماہ کی سرمائی تعطیلات کے بعد ہفتہ کو کھلی دھوپ کے بیچ سبھی سرکاری ونجی اسکولوں اور کالیجوں میں تعلیمی سرگرمیاںبحال ہونے سے سکولوں کی رونق لوٹ آئی۔تاہم کشید ہ حالات کو مد نظر رکھتے ہو ئے جنوبی کشمیر میں کل بھی تعلیمی ادارے بند رہے۔نمائندےکے مطابق سال 2017میں موسم سرما کی شروعات کے ساتھ ہی وادی سرد ترین لپیٹ میں آگئی تھی اور تھٹھرتی سردی و یخ بستہ ہوائوں کے پیش نظر محکمہ تعلیم نے گذشتہ سال ماہ دسمبر سے تمام تعلیمی ادارے بند رہنے کا علان کیا تھاچنانچہ کم و بیش اڑ ھا ئی ماہ کی تعطیلات کے بعدہفتہ کو تقریباً تمام سرکاری وغیر سرکاری تعلیمی ادارے دوبارہ کھل گئے۔یہ امر قابل ذکر ہے کہ یہ اسکول یکم ما رچ کو کھلنے والے تھے تاہم جنوبی کشمیر کے شوپیاں ضلع میں فوج کے ہاتھوں دو جنگجوئوں اور چار شہریوں کی ہلاکت کے پیش نظر میڈل سطح کے نیچے تمام اسکولوں کو جمعہ تک بند کیا گیا تھا البتہ امکانی احتجاج کے پیش نظر ہفتہ کو بھی جنوبی کشمیر کے تعلیمی اداروں کو بند رکھنے کا فیصلہ کیا گیا اور اب جنوبی کشمیر کے تمام اضلاع کے تعلیمی ادار ے سوموار کو کھل جائیں گے البتہ شمالی اور وسطی کشمیر میں موجود تمام سرکاری و غیر سرکاری تعلیمی ادارے کھل گئے۔ صبح سویرے رنگ برنگی وردیوں میں ملبوس بچوں کو کتابوںکے بستے اٹھائے ہوئے اسکولوں کا رخ کرتے ہوئے دیکھا گیا۔ جس سے شہر و دیہات میں سرمائی تعطیلات کے بعد پہلی بار رونق واپس لوٹ آئی ہو۔ کھلی دھوپ کے بیچ سکول کھلنے کے پہلے روز اکثر والدین بچوں کو چھوڑنے خودا سکول تک گئے اور اْنہوں نے بچوں کی اْنگلیاں پکڑ رکھی تھیں جبکہ مختلف مقامات پر بھی والدین اور سکولی طلبہ وطالبات کی بھاری بھیڑنظر آئی جو اپنے اسکولوں کی گاڑیوں کا انتظار کررہے تھے۔اسکول کھلنے کے بعد تعلیمی اداروں کے باہر بھی طلباء وطالبات کی غیر معمولی گہما گہمی نظر آئی اور خاص طور پر شہر کے بازاروں اور سڑکوں پر نئی رونق دیکھنے کو ملی۔ صبح سے اسکول جانے والے طلبہ و طالبات کا فی خوش دکھائی دے رہے تھے اور ان میں کافی جوش وخروش پایا جا رہا تھا ۔کئی بچوں کا نیا ایڈمشن ہوا ہے جو زیادہ پر جوش نظر آرہے تھے ۔وتستاٹائمز کے رپورٹر نے شہر کے مختلف علاقوں میں قائم اسکولوںکا دورہ کرکے بتایا کہ صبح سویرے سے ہی طلبہ و طالبات اپنے اسکولوں کی طرف رواں دواں تھے جبکہ کئی بچوں کے ساتھ ان کے والدین بھی تھے جو اپنے بچوں کو اسکولوں میں چھوڑنے آئے تھے شہر سرینگر کی سڑکوں اور وادی کے دوسرے قصبوں میں بھی صبح سویرے اسکولی بس بچوں کو لیکر اسکولوں کی طرف دوڑتی ہوئی نظر آرہی تھیں۔اسی طر ح وادی کے مختلف اسکولوں کے باہر والدین کی نظر آ ئی۔ نمائندے کے مطابق تمام سرکاری و پرائویٹ اسکولوں میں کافی گہما گہمی تھی اور بچوں کے ساتھ ساتھ ان کے اساتذہ بھی چھٹیوں کے بعد ڈیوٹی دینے کے لئے اسکولوں میں حاضر ہوگئے جس کے دوران اسکولPrayerمیں بچوں نے بڑھ چڑھ کر حصہ لیا اور وہ ایک دوسرے کے ساتھ گلے لگ رہے تھے۔عرفان نامی ایک طالبہ نے بتایا کہ وہ سرکاری تعطیل کے دوران اپنے والدین کے ساتھ دہلی چلی گئی تھی اور وہ کل ہی واپس لوٹ گی ۔ انہوں نے کہا کہ وہ اڑھائی مہینوں کے بعد اپنے ہم جماعتوں سے ملی ہے اور وہ بے حد خوش ہے۔ اس دوران محکمہ تعلیم کے ضلع افسران پورے دن کافی مشغول رہے اور وہ مختلف تعلیمی اداروں کی چیکنگ اور انتظامات کا جائزہ لیتے رہے۔

متعلقہ خبریں

پلوامہ جم خانہ نے شوپیان کو شکست دی، میچ دیکھنے کیلئے پورا ضلع اُمڈ آیا پلوامہ / تنہا ایاز/ لانتھورہ کرکٹ لیگ شوپیان.

شاذونادرہی ملکی وغیرملکی سیاحوں کی آمد ،مقامی سیلانی ہی شکارہ والوں کی روزی روٹی کاذریعہ سری نگر:۲۲،ستمبر/فروٹ.

کارخانوں کو جدید ساز و سامان سے لیس کرنے کیلئے رعایت کا مطالبہ سرینگر؍22،ستمبر ؍حکومت کی جانب سے معاشی پیکیج کے.

اکھنور میں حد متارکہ کے نزدیک اسلحہ وگولی بارود برآمد کیا گیا :فوج
سرینگر؍22،ستمبر ؍ہتھیاروں کی سپلائی کے لئے.

کئی جنگجو فورسز محاصرہ توڑ کر فرار ہونے میں کامیاب ،تلاش جاری ،عنقریب دھر لیا جائیگا :پولیس چرار شریف؍22،ستمبر.