ویڑیو

ای پیپر

اہم خبریں

آج یہاں سنور کلی پورہ ماگام میں گلشن کلچرل فورم کشمیرکے اہتمام سے ایک ادبی.

جدید دور میں گرمی دینے والے آلات کے باوجود بھی کانگڑی کی اہمیت برقرار

آٹھ زونوں سے لڑکوں اور لڑکیوں نے حصہ لیا
پلوامہ/ تنہا ایاز /
یوتھ سروسز.

’کشمیر میںلاقانونیت اور جنگل راج جیسی صورتحال ‘

   109 Views   |      |   Tuesday, January, 26, 2021

’کشمیر میںلاقانونیت اور جنگل راج جیسی صورتحال ‘

مرکزی سرکار نے جموں و کشمیر کے لوگوں کو آئینی اور جمہوری حقوق سے محروم کردیا:محمد اکبر لون
سرینگر؍26،نومبر ؍نیشنل کانفرنس کے سینئر لیڈر اور ممبر پارلیمنٹ ایڈوکیٹ محمد اکبر لون نے کہا کہ ایک طرف ملک 71واں یوم آئین منا رہا ہے وہی دوسری جانب بدقسمتی سے 5اگست 2019 کے بعد جموں و کشمیر کے لوگوں کو تمام آئینی اور جمہوری حقوق سے محروم کردیا گیا ہے اور اس عمل سے پورے جموں و کشمیر میں ایک غیر یقینی صورتحال پیدا ہوگئی ہے۔کے این ایس کے مطابق انہوں نے کہا کہ جموں و کشمیر میں اس وقت کسی قسم کی قانون کی پاسداری نہیں ہے جبکہ یہاں پر لاقانونیت اور جنگل راج جیسی صورتحال پیدا کرکے زبردستی قوانین ٹھوسے جارہے ہیں۔انکا کہنا تھا کہ جس ملک میں آئین اور جمہوریت کو بالا تر سمجھا جاتا تھا آج اسی آئین کی سنگین خلاف ورزی کی جارہی ہے۔ممبر پارلمنٹ نے کہا کہ جموں کشمیر کا رشتہ ہندستان کے ساتھ دفعہ 370اور35 اے کے تحت ہی ہوا تھا اور اس قانون کو ملک کے دونوں ایوانوں نے بھی منظور کیا تھا جبکہ ہندوستان کے اس وقت کے قدآور لیڈران جن میں سردار پٹیل اور شاما پرشاد مکرجی بھی شامل تھے نے اس قانون کو تسلیم کیا تھا لیکن آج کی حکومت نے اسی قانون کا خاتمہ کردیا۔ایڈوکٹ لون نے بی جے پی کا نام لئے بغیر سخت گیر موقف رکھنے والی مرکزی سرکار کے لیڈران سے اپیل کی وہ جموں و کشمیر کے لوگوں کیلئے آئینی اور جمہوری حقوق کو ترجہی بنیادیوں پر بحال کریں اور تب ہی جموں کشمیر میں تعمیر ترقی اور امن کی فضا قائم ہوسکتی ہے۔محمد اکبر لون نے کہا کہ روشنی ایکٹ میں نیشنل کانفرنس کے صدر اور سابق وزیر اعلی ڈاکٹر فاروق عبداللہ کو ملوث کرنا سراسر سیاسی انتقام گیری ہے اور بی جے پی اپنی ساخت کو بچانے کے لئے اس طرح کے حربے استعمال کررہی ہے جس کی نیشنل کانفرنس اور یہاں کے لوگ شدید الفاظ میں مذمت کرتے ہیں۔

متعلقہ خبریں

تحریر: رشید پروین ؔسوپور سلسلہ روزو شب نقش گر حادثات
سلسلہ روزو شب اصل حیات و ممات
سلسلہ روزو شب تارِ حریر.

بہ گلشن بدرنی چھس پننہ تہ پننہ انجمن گلشن کلچرل فورم کشمیرکین تمام ارکانن ہندہ طرفہ کشیر ہندین سرکردہ تہ نمایندہ.

گزشتہ شب گلشن کلچرل فورم کشمیراور لسہ خان فدا فاؤنڈیشن نے مشترکہ طور سلسلہ قادریہ وفاضلی کے معروف صوفی بزرگ اور.

تحریر: حافظ میر ابراھیم سلفی عشرتی گھر کی محبت کا مزا بھول گئے
کھا کے لندن کی ہوا عہد وفا بھول گئے
قوم کے غم.

آج یہاں سنور کلی پورہ ماگام میں گلشن کلچرل فورم کشمیرکے اہتمام سے ایک ادبی نشست بزم فریاد منعقد ہوئ۔ کئ مہینوں کے.