ویڑیو

ای پیپر

اہم خبریں

آج یہاں سنور کلی پورہ ماگام میں گلشن کلچرل فورم کشمیرکے اہتمام سے ایک ادبی.

جدید دور میں گرمی دینے والے آلات کے باوجود بھی کانگڑی کی اہمیت برقرار

آٹھ زونوں سے لڑکوں اور لڑکیوں نے حصہ لیا
پلوامہ/ تنہا ایاز /
یوتھ سروسز.

کشمیری عوام ’’ آرٹ آف لیونگ‘‘ جانتے ہیں/انجینئر رشید

ایس کے آئی سی سی میں پیش آمدہ واقعہ نئی دلی کیلئے چشم کشا،روی شنکر کو ہندوستان کو سچائی بتانے کا مشورہ

   476 Views   |      |   Wednesday, January, 20, 2021

سرینگر// ایس کے آئی سی سی میں شری شری روی شنکر کے پروگرام کے دوران پیش آئے واقعہ کو نئی دلی کیلئے چشم کشا بتاتے ہوئے عوامی اتحاد پارٹی کے سربراہ اور ممبر اسمبلی لنگیٹ انجینئر رشید نے کہا ہے کہ شری شری کو ایمانداری اور سچائی کے ساتھ جموں کشمیرکے لوگوں کے جذبات اور احساسات پورے ہندوستان تک پہنچانے چاہیئے۔آج یہاں سے جاری کردہ ایک بیان میں انجینئر رشید نے کہا کہ کشمیریوں کو ماضی کے بھول جانے کی نصیحت دینے سے قبل شری شری روی شنکر کو نئی دلی کو بھی ماضی کی ہٹ دھرمی چھوڑ کر مسئلہ کشمیر کے پائیدار ،حقیقت پسندانہ اور محترم حل پر تیار ہونے کا مشورہ دینا چاہیئے تھا۔انہوں نے کہا کہ اگر شری شری روی شنکر نے 1989سے قتل کئے گئے کشمیریوں کے بارے میں اپنے زیر تصرف فورموں میں کبھی آواز اٹھائی ہوتی تو کشمیری عوام یقیناََ انکی کوششوں کی تعریفیں کرتے۔انہوں نے کہا کہ شری شری روی شنکر کو کشمیر آکر لوگوں کو نصیحت دینے کی کوشش کرنے سے قبل یہاں جاری قتل عام کی مذمت کرنے کے علاوہ سیول سوسائٹی اور دیگر ذرائع سے حکومت ہند پر کشمیریوں کو انکا حقِ رائے شماری دینے پر آمادہ کرنے کیلئے دباؤ ڈالنے کی کوشش کرنی چاہیئے تھی۔انجینئر رشید نے مزید کہا کہ جو کچھ بھی ایس کے آئی سی سی میں شرکائِ مجلس نے کیا شری شری روی شنکر اسی کے مستحق تھے کیونکہ کشمیریوں کو ’’آرٹ آف لیونگ‘‘پر انکا خطبہ زخموں پر نمک پاشی کے مترادف تھا۔انجینئر رشید نے کہا کہ کشمیریوں کونام نہاد پیامِ محبت دینے کی بجائے شری شری کو شوپیاں اور دیگر جگہوں پر فوجی کیمپوں میں جاکر انہیں محبت اور انسانیت کی اہمیت سمجھانی چاہیئے تھی۔کشمیریوں کو کسی اور سے جینے کا سلیقہ سیکھنے کی ضرورت نہ ہونے کے دعویٰ کے ساتھ انجینئر رشید نے کہا کہ وہ جو ابھی تک ایک لاکھ سے زیادہ جانیں کھو چکے ہوں،اپنی عزت اور وقار قربان کرچکے ہوں،جن سے بیگار لی جاچکی ہو اور جنہیں زبردستی گمشدگیوں کا شکار بنایا گیا ہو،جنہیں پیلٹ گن سے اندھا کردیا گیا ہو،جنہیں سولی چڑھادیا گیا ہو اور پھر لاشیں تک واپس نہ کی گئی ہوںاور جنہیں روز ہیذلیل کیا جاتا ہوشری شری سے بہتر ’’ٓٓرٹ آف لیونگ‘‘جانتے ہیں۔انہوں نے کہا کہ کشمیری کے حوالے سے شری شری روی شنکر کی ابھی تک کل’’ خدمت‘‘ یہ ہے کہ انہوں نے برہان وانی کی شہادت کے فوری بعد انکے والد کے خلوص اور سادگی کا فائدہ اٹھاکر انکی شبیہ کو خراب کرنے اور کشمیر میں مزید ابہام پیدا کرنے کی کوشش کی ۔انہوں نے کہا کہ شری شری کے پروگرام کے دوران آزادی کے حق میں نعرہ بازی اور شرکاء کے دکھائے ہوئے غصہ سے شری شری کو سمجھنا چاہیئے کہ کشمیری عوام کیلئے ہندوستان کی مرضی کے سامنے سرنڈر قابل برداشت نہیں ہوسکتا ہے۔انجینئر رشید نے کہا کہ اگرچہ کشمیری عوام ہندوستان کے دشمن نہیں ہیں تاہم وہ اقوام متحدہ کے موعودہ سیاسی حقوق کا مطالبہ کرتے ہیں اور شری شری روی شنکر کو سمجھ لینا چاہیئے کہ کشمیریوں کیلئے اپنے ماضی کو بھول جانا انتہائی مشکل ہے۔انہوں نے کہا کہ شری شری روی شنکر جیسے لوگ وقت وقت وقت پر اسلئے کشمیر کا دورہ کرتے ہیں تاکہ یہاں کے لوگوں کی نبض کو ٹٹول کر دیکھیں کہ آیا وہ ابھی تک مطالبۂ رائے شماری پر بنے ہوئے ہیں یا پھر انکی سکت ختم ہو چکی ہے اور وہ تھک گئے ہیں۔

متعلقہ خبریں

گزشتہ شب گلشن کلچرل فورم کشمیراور لسہ خان فدا فاؤنڈیشن نے مشترکہ طور سلسلہ قادریہ وفاضلی کے معروف صوفی بزرگ اور.

تحریر: حافظ میر ابراھیم سلفی عشرتی گھر کی محبت کا مزا بھول گئے
کھا کے لندن کی ہوا عہد وفا بھول گئے
قوم کے غم.

آج یہاں سنور کلی پورہ ماگام میں گلشن کلچرل فورم کشمیرکے اہتمام سے ایک ادبی نشست بزم فریاد منعقد ہوئ۔ کئ مہینوں کے.

جدید دور میں گرمی دینے والے آلات کے باوجود بھی کانگڑی کی اہمیت برقرار
روایتی فیرن میں تبدیلی،بازاروں میں کوٹ.

آٹھ زونوں سے لڑکوں اور لڑکیوں نے حصہ لیا
پلوامہ/ تنہا ایاز /
یوتھ سروسز انیڈ سپورٹس کی مجانب سے میکس ویل کالج.