ویڑیو

ای پیپر

اہم خبریں

آج یہاں سنور کلی پورہ ماگام میں گلشن کلچرل فورم کشمیرکے اہتمام سے ایک ادبی.

جدید دور میں گرمی دینے والے آلات کے باوجود بھی کانگڑی کی اہمیت برقرار

آٹھ زونوں سے لڑکوں اور لڑکیوں نے حصہ لیا
پلوامہ/ تنہا ایاز /
یوتھ سروسز.

پس پردہ عزائم سامنے آگئے:عمرعبداللہ

   269 Views   |      |   Wednesday, January, 27, 2021

سرینگر// نیشنل کانفرنس نائب صدر عمر عبداللہ نے کہا کہ اقامتی قانون کے حوالے سے انکی خدشات برمحل ثابت ہورہی ہیں۔ جموں کشمیر میں25ہزار کے قریب غیر مقامی باشندوں کو اقامتی قانون کی اسناد اجراء کرنے پر نیشنل کانفرنس کے نائب صدر عمر عبداللہ نے کہا کہ انکی جماعت اس قانون کی روز اول سے ہی شدید مخالف رہی ہے کیونکہ وہ اس کے پس پردہ عزائم کو دیکھ رہے تھے۔عمر عبداللہ نے سماجی رابطہ گاہ ٹیوٹر پر تحریر کیا’’جموں وکشمیر میں نئے اقامتی قانون کے بارے میں ہمارے تمام خدشات منظر عام پر آرہے ہیں۔ نیشنل کانفرنس ان تبدیلیوں کی روز اول سے ہی مخالف رہی ہے کیونکہ ہم ان کے پس پردہ مذموم عزائم دیکھ رہے تھے۔ ان اقامتی قوانین سے پیر پنچال کے دونوں طرف جموں وکشمیر کے لوگ متاثر ہوں گے۔‘‘ادھرپارٹی ترجمانِ اعلیٰ آغا سید روح اللہ نے ایک بیان میں کہا کہ سوشل میڈیا پر وائرل ڈومیسائل سرٹیفکیٹ اور اس کیخلاف غصے کے اظہار سے ثابت ہوا ہے کہ اقامتی قانون روز اول سے ہی غلط تھا اور اس بارے میں عوامی سطح پر جو خدشات پائے جارہے تھے وہ بالکل صحیح ہیں۔ انہوں نے کہا کہ جموں کشمیر تنظیم نوایکٹ2019، جس کے تحت ریاست کا اپنا آئین ہونے کے باوجود جموں وکشمیر کا درجہ کم کرنے کے ساتھ ساتھ اسے منقسم کیا گیا،غیر آئینی ہے۔ یہی وجہ ہے کہ اس معاملے کیخلاف ہر سطح پر احتجاج ہو ااور معاملہ عدالت عظمیٰ کے روبرو زیر سماعت ہے۔ جموں و کشمیر تنظیم نوپر مشتمل ڈومیسائل نظام کے تحت (ریاستی قوانین کی اصلاح) آرڈر 2020 اورجموں وکشمیر گرانٹ آف ڈومیسائل سرٹیفکیٹ (طریقہ کار) قواعد 2020 ،کا فریم ورک اور اس نظام کے تحت اٹھائے گئے تمام اقدامات غیر آئینی ہیں۔ انہوں نے کہا کہ مرکزی حکومت اور ریاستی انتظامیہ آئینی سکیم سے جڑے ہوئے ہیں اور جس تنظیم نو ایکٹ کے تحت یہ اقدامات اٹھائے جارہے ہیں ، وہ ابھی عدالت عظمیٰ میں زیر سماعت ہے اور سب سے اعلیٰ آئینی عدالت کے احترام میں اس قسم کے اقدامات سے باز رہنا چاہئے۔ انہوں نے کہا کہ ایساقانون، جس کی آئینی حیثیت عدالت عظمیٰ میں زیر بحث ہو، کے اختیارات کا استعمال کرنا حتمی نتائج پر اثر انداز ہونے کے مترادف ہے۔

متعلقہ خبریں

تحریر: رشید پروین ؔسوپور سلسلہ روزو شب نقش گر حادثات
سلسلہ روزو شب اصل حیات و ممات
سلسلہ روزو شب تارِ حریر.

بہ گلشن بدرنی چھس پننہ تہ پننہ انجمن گلشن کلچرل فورم کشمیرکین تمام ارکانن ہندہ طرفہ کشیر ہندین سرکردہ تہ نمایندہ.

گزشتہ شب گلشن کلچرل فورم کشمیراور لسہ خان فدا فاؤنڈیشن نے مشترکہ طور سلسلہ قادریہ وفاضلی کے معروف صوفی بزرگ اور.

تحریر: حافظ میر ابراھیم سلفی عشرتی گھر کی محبت کا مزا بھول گئے
کھا کے لندن کی ہوا عہد وفا بھول گئے
قوم کے غم.

آج یہاں سنور کلی پورہ ماگام میں گلشن کلچرل فورم کشمیرکے اہتمام سے ایک ادبی نشست بزم فریاد منعقد ہوئ۔ کئ مہینوں کے.