ویڑیو

ای پیپر

اہم خبریں

آج یہاں سنور کلی پورہ ماگام میں گلشن کلچرل فورم کشمیرکے اہتمام سے ایک ادبی.

جدید دور میں گرمی دینے والے آلات کے باوجود بھی کانگڑی کی اہمیت برقرار

آٹھ زونوں سے لڑکوں اور لڑکیوں نے حصہ لیا
پلوامہ/ تنہا ایاز /
یوتھ سروسز.

نئے پروبیشن قواعد کو پہلے سے نافذ العمل کرنے کا مطالبہ /الطاف بخاری

   225 Views   |      |   Wednesday, January, 20, 2021

جذباتی سیاست کا دور ختم

سرینگر ؍25،جون؍جموں وکشمیراپنی پارٹی صدر سعیدمحمد الطاف بخاری نے کہا ہے کہ ایس آر او 202کے پروبیشن شق میں ترمیم کے پیش نظر حکومت کی طرف سے آسامیوں کو واپس لینا اور پھر سے مشتہر کرنا لاکھوں امیدواروں میں انتشار اور مایوسی پیدا کرنے کے مترادف ہے جو عمر کی حد پار کرچکے ہیں۔ ایک بیان میں بخاری نے مطالبہ کیا ہے کہ ایس آر او202کا ترمیم شدہ ورژن جس کے تحت سرکاری ملازمتوں میں نئی بھرتی کی پروبیشن مد ت پانچ سال سے گھٹا کر دو سال کی گئی ہے، کو سبھی اُمیدواروں پر لاگوکیا جائے جنہوں نے پہلے ہی سرکاری آسامیوں کے لئے اپلائی کیا ہے اور سال 2015سے جن کا بھرتی عمل مختلف مراحل پر اٹکا ہوا ہے۔ انہوں نے کہاکہ حالیہ آسامیوں کو واپس لینے اور پھر دوبارہ سے مشتہر کرنا جموں وکشمیر کے لاکھوں نوجوانوں کے کیرئر کے لئے انتہائی خطرناک ہے جنہوں نے 2015سے نوکریوں کے لئے اپلائی کیاہے اور تحریری امتحانات وانٹرویوز کے منتظر ہیں۔ انہوں نے کہا’’یہ بدقسمتی ہے کہ حکومت آئے روز مشتعل اور متضاد احکامات جاری کر کے جموں وکشمیر کے نوجوانوں کا مستقبل برباد کرنے پر تلی ہے‘‘۔ انہوں نے کہاکہ 19جون2020کو عمومی انتظامی محکمہ کی طرف سے دوبارہ ایڈورٹائزمنٹ کے حکمنامہ کا کوئی جواز ہے اور نہ منطق کیونکہ سال 2015سے جاری مختلف ایڈورٹائزمنٹ کے رد عمل میں جن بیشتر امیدواروں نے سرکاری ملازمتوں کے لئے اپلائی کیاتھا، وہ اب عمر کی حد پار کرچکے ہیں اور تازہ بھرتی عمل کے لئے اہل نہیں۔انہوں نے کہاکہ حکومت کیسے عمر کی حد پار کرچکے نوجوانوں کوہوئے نقصان کی تلافی کرے گی جوکہ شدت سے سرکاری ملازمتوں کے لئے مواقعوں کا انتظار کر رہے تھے اور اب وہ نا اہل ہوگئے ؟۔ اُن کے کنبہ جات کا کیا ہوگا جنہیں اپنی اولاد سے اُمیدیں وابستہ تھیں، تازہ حکمنامہ بغیر ذہن استعمال کئے جاری کیاگیا ہے، حکومت کو چاہئے کہ فوری طور اِس آرڈر کو واپس لیاجائے تاکہ متاثرہ اُمیدوارراحت کی سانس لیں۔ اپنی پارٹی صدر نے ایس آر او202کو مکمل تحلیل کرنے کا مطالبہ دوہراتے ہوئے کہا ہے کہ موجودہ حکومت نے ایس آر او کے سیاہ شقوں کو برقرار رہا ہے جوجموں وکشمیر کے ملازمین اور بے روزگار نوجوانوں کے مفادات کے خلاف ہی۔انہوں نے مطالبہ کیاکہ ایس آر او202کو مکمل طور تحلیل کیاجائے ۔انہوں نے مطالبہ کیاکہ حکومت کو ایس آر او202 کو مکمل طور پر واپس لینا چاہئے کیونکہ اس کی دوسری شقوں کے مطابق نئی بھرتیوں کے ساتھ پرانی تقرریاں کم از کم پانچ سال کے لئے نان ٹرانسفرہوجائیں گی۔ اگر ایس آر او202 اپنی موجودہ شکل میں بدستور قائم رہتا ہے تو ، اس اصول کے تحت آنے ملازمین کو اُن کی سروس کے ابتدائی پانچ سالوں میں بھی ترقی نہیں دی جائے گی۔ انہوں نے بیان میں کہا ہے کہ موجودہ حکومت نے اِس سیاہ ایس آر او کو جاری رکھا ہے جوکہ ملازمین کے مفادات کے خلاف ہے۔ اُنہوں نے کہا’’اگرچہ حکومت نے پروبیشن مدت پانچ سے گھٹا کر دو سال کر کے ایس آر او202میں ترمیم کی ہے لیکن ایس آر او کے باقی متنازعہ شقیں ابھی جموں وکشمیر ملازمین پرلٹک رہی ہیں۔ انہوں نے کہاکہ ایس آر او 202کی شقوں کے اطلاق سے پہلے سے تعینات ملازمین اور نئی بھرتی پالیسی کے تحت سبھی ملازمین کی پہلے پانچ سال تک ٹرانسفر نہیں ہوگی۔ اگر ایس آر او 202 جاری رہتا ہے تو اِن ملازمین کو ابتدائی پانچ سالوں میں ترقی بھی نہیں دی جائے گی۔ یہ عجیب وغریب اور غیر متوقع ہے کیونکہ ایسے قواعد جموں وکشمیر کے علاوہ اور کسی بھی ملک میں نہیں، لہٰذا اِس فرق کو فوری ختم کرنے کی ضرورت ہے۔الطاف بخاری نے مزید کہا ہے کہ پروبیشن مد ت پانچ سے گھٹا کر دو سال کر کے حکومت نے ایس آر او 202کی بقیہ شقیں نئی بھرتی پالیسی میں بھی برقرار رکھی ہیں۔ مرکزی وزیر داخلہ سے اِس معاملہ میں مداخلت کی اپیل کرتے ہوئے الطاف بخاری نے کہا کہ ’’جموں و کشمیر کے نوجوانوں کے ساتھ نہ صرف حکومت نے دھوکہ کیا ہے بلکہ انہیں جموں وکشمیر کے تئیں حکومت ِ ہند کے دوہرے معیار اور تضاد ات سے متعلق حدشات بھی جائز لگتے ہیں۔کے این ایس

متعلقہ خبریں

تحریر: رشید پروین ؔسوپور سلسلہ روزو شب نقش گر حادثات
سلسلہ روزو شب اصل حیات و ممات
سلسلہ روزو شب تارِ حریر.

بہ گلشن بدرنی چھس پننہ تہ پننہ انجمن گلشن کلچرل فورم کشمیرکین تمام ارکانن ہندہ طرفہ کشیر ہندین سرکردہ تہ نمایندہ.

گزشتہ شب گلشن کلچرل فورم کشمیراور لسہ خان فدا فاؤنڈیشن نے مشترکہ طور سلسلہ قادریہ وفاضلی کے معروف صوفی بزرگ اور.

تحریر: حافظ میر ابراھیم سلفی عشرتی گھر کی محبت کا مزا بھول گئے
کھا کے لندن کی ہوا عہد وفا بھول گئے
قوم کے غم.

آج یہاں سنور کلی پورہ ماگام میں گلشن کلچرل فورم کشمیرکے اہتمام سے ایک ادبی نشست بزم فریاد منعقد ہوئ۔ کئ مہینوں کے.