ویڑیو

ای پیپر

اہم خبریں

آج یہاں سنور کلی پورہ ماگام میں گلشن کلچرل فورم کشمیرکے اہتمام سے ایک ادبی.

جدید دور میں گرمی دینے والے آلات کے باوجود بھی کانگڑی کی اہمیت برقرار

آٹھ زونوں سے لڑکوں اور لڑکیوں نے حصہ لیا
پلوامہ/ تنہا ایاز /
یوتھ سروسز.

محبوبہ مفتی کے بیان کے خلاف جموں میں احتجاجی مظاہرہ

   187 Views   |      |   Tuesday, January, 26, 2021

محبوبہ مفتی علیحدگی پسندوں کی بولی بول رہی ہیں۔ پیپلز الائنس کی کوئی عوامی اہمیت نہیں ہے /مرکزی وزیر جتندر سنگھ
سرینگر24//اکتوبر/ // پی ڈی پی صدر کی جانگ سے ترنگے کے متعلق دئے گئے بیان کے خلاف جموں میں بھاجپا اور دیگر تنظیموں نے احتجاج کیا۔ ادھر وزیر اعظم ہند کے دفتر میں تعینات وزیر مملکت نے الزام لگایا کہ سابق وزیرا علیٰ علیحدگی پسندوں کی بولی بول رہی ہے۔ انہوںنے کہا کہ دفعہ 370کی منسوخی تاریخی فیصلہ ہے اور اس کی واپسی کے بارے میں سوچا بھی نہیں جاسکتا۔ خبر رساں ایجنسی یو پی آئی کے مطابق پی ڈی پی صدر اور سابق وزیر اعلیٰ محبوبہ مفتی کے ترنگے کے بارے میں بیان کے خلاف جموں میں ہفتے کو احتجاجی مظاہرہ ہوا۔ان مظاہروں کا اہتمام شیو سینا ڈوگرہ فرنٹ نامی تنظیم نے کیا تھا۔یاد رہے کہ محبوبہ مفتی نے گذشتہ روز طویل نظر بندی کے بعد اپنی پہلی پریس کانفرنس کے دوران کہا ’’ میں تب تک کوئی جھنڈا نہیں اٹھاؤں گی جب تک نہ جموں وکشمیر کا جھنڈا واپس دیا جائے گا‘‘۔جموں وکشمیر کے بی جی پی یونٹ نے موصوفہ کے ان کلمات کو’’ بغاوت‘‘ سے تعبیر کرتے ہوئے ان کی گرفتاری کا مطالبہ کیا ہے۔ادھر وزیر اعظم ہند کے دفتر میں تعینات وزیر مملکت ڈاکٹر جتندر سنگھ نے سابق وزیر اعلیٰ محبوبہ مفتی کے بیان پر شدید برہمی کا اظہار کرتے ہوئے کہاکہ پی ڈی پی صدر علیحدگی پسندوں کی بولی بول رہی ہے۔ انہوںنے کہاکہ کشمیر کی مین اسٹریم پارٹیاں اب علیحدگی پسند خیمے میں تبدیل ہو گئی ہے۔ انہوںنے کہاکہ مرکزی حکومت نے دفعہ 370کو منسوخ کرکے تاریخی فیصلہ لیا ہے اور جموںوکشمیر کے سبھی طبقوں کے لوگ مرکزی حکومت کے اس فیصلے سے کافی خوش نظر آرہے ہیں۔ انہوںنے کہاکہ پچھلے ایک سال کے دوران جموںوکشمیر میں تعمیر وترقی کے نئے دور کا آغاز ہوا ہے جبکہ جموں اور کشمیر کے سبھی اضلاع میں نئے پروجیکٹ ہاتھ میں لئے گئے ہیں۔ انہوںنے کہاکہ اقتدار ہاتھ سے نکلنے کے بعد پی ڈی پی اور نیشنل کانفرنس تل ملا رہی ہیں ۔ انہوںنے کہاکہ وادی کشمیر کی مین اسٹریم پارٹیوں کی ایک تاریخ رہی ہے کہ جب وہ بھی اقتدار میں ہوتی ہیں تو بھارت کے گیت گائے جاتے ہیں اور جونہی اقتدار اُن کے ہاتھ سے نکل جاتا ہے تو ملک مخالف بیانات دینے سے بھی گریز نہیں کیا جارہا ہے۔ انہوںنے کہاکہ نیشنل کانفرنس اور پی ڈی پی اور عوام کے سامنے ننگا ہو چکی ہے کیونکہ اقتدار میں رہ کر ایک بیان اور اقتدار سے باہر ملک مخالف بیانات دینا اب اُن کی عاد ت بن گئی ہے اور اس پر دھیان دینے کی کوئی ضرورت نہیں ہے۔ جتندر سنگھ نے بتایا کہ وادی کشمیر کا نوجوان اب مین اسٹریم میں آنا چاہتا ہے اور بھاجپا کی قیادت والی مرکزی سرکار اُس کو ہر طرح کی مدد فراہم کرنے کیلئے تیار ہیں۔ انہوںنے کہاکہ مین اسٹریم پارٹیوں کی جانب سے تشکیل شدہ پیپلز الائنس کی کوئی اہمیت ہی نہیں ہے کیونکہ مذکورہ پارٹیاں ہی جموںوکشمیر کے لوگوں کی ترجمانی نہیں کرتی ہیں لہذا یہ سبھی ڈھکوسلہ ہے اور جونہی ان پارٹیوں کو اقتدار ملے گا وہ دوبارہ بھارت کے گائیں گے۔

متعلقہ خبریں

تحریر: رشید پروین ؔسوپور سلسلہ روزو شب نقش گر حادثات
سلسلہ روزو شب اصل حیات و ممات
سلسلہ روزو شب تارِ حریر.

بہ گلشن بدرنی چھس پننہ تہ پننہ انجمن گلشن کلچرل فورم کشمیرکین تمام ارکانن ہندہ طرفہ کشیر ہندین سرکردہ تہ نمایندہ.

گزشتہ شب گلشن کلچرل فورم کشمیراور لسہ خان فدا فاؤنڈیشن نے مشترکہ طور سلسلہ قادریہ وفاضلی کے معروف صوفی بزرگ اور.

تحریر: حافظ میر ابراھیم سلفی عشرتی گھر کی محبت کا مزا بھول گئے
کھا کے لندن کی ہوا عہد وفا بھول گئے
قوم کے غم.

آج یہاں سنور کلی پورہ ماگام میں گلشن کلچرل فورم کشمیرکے اہتمام سے ایک ادبی نشست بزم فریاد منعقد ہوئ۔ کئ مہینوں کے.