ویڑیو

ای پیپر

اہم خبریں

آج یہاں سنور کلی پورہ ماگام میں گلشن کلچرل فورم کشمیرکے اہتمام سے ایک ادبی.

جدید دور میں گرمی دینے والے آلات کے باوجود بھی کانگڑی کی اہمیت برقرار

آٹھ زونوں سے لڑکوں اور لڑکیوں نے حصہ لیا
پلوامہ/ تنہا ایاز /
یوتھ سروسز.

فلم بجرنگی بھائی جان نے میری پہچان بنا دی/ معروف اداکار جا وید خان

   357 Views   |      |   Sunday, January, 24, 2021

پلوامہ/ تنہا ایاز /

وادی کے باہر ایک اداکار کو عزت کی جا تی ہے اس کو ہر طرح سپورٹ اور مدد فراہم کی جا تی ہے یہاں اسکے برعکس ہے یہاں اس پیشے سے وابستہ افراد جن میں ٹیلنٹ کی کوئی کمی نہیں ہے ،در در کی ٹھوکرے کھا رہی ہے۔ سرکار کی جانب سے انکے لئے کچھ بھی نہیں کیا جارہا ہے۔ ان خیالات کا اظہار فلم بجرنگی بھائی جان میں کام کرنے والے وادی کے معروف ادکار جا وید خان نے اپنے ایک انٹریو میں کیا۔ تفصیلات کیمطا بق وادی کشمیر کا معروف اداکار جا وید خان جو کسی تعرف کے محتاج نہیں ہے۔ پچھلے 25برسوں سے اداکا ری پیشہ سے وابستہ ہے۔ اپنے ایک انٹریو میں انہوں نے کہا کہ سال1996ء میں انہوں نے دوردرشن سرینگر سے آڈیشن پاس کر کے اداکاری کی دنیا میں قدم رکھا اور ابھی تک بہت سارے کشمیری ڈراموں کے علاوہ بالی ووڈ فلموں میں کام کرنے کا موقع ملا ہے۔ انہوں نے کہا کہ ایک کشمیری ڈرامہ بدری نا تھ کی اَدری مہر میں سب سے پہلے کام کر نے کا موقع ملا۔ انہوں نے کہا کہ اس ڈرامہ میں میرا رول ایک کشمیری پنڈت ہیرو تھا ڈرامہ کا مقصد ہند مسلم بھائی چارے رواداری کودکھا نا تھا۔ یہ ڈرامہ کا فی مشہور ہوا اور دوردرشن سے یہ ڈرامہ ٹیلی کاسٹ ہوا۔ لوگوں نے اس ڈرامے کو بہت پسند کیا۔انہوں نے مزید کہا کہ اسکے بعد ایک اور ڈرامہ ’’یہ کتھ انتظار‘‘ یہ بھی کشمیری ڈرامہ ہے اور اس ڈرامہ کا مقصد یہاں کی بے روزگاری کو اُجا گر کرنا تھا۔ اس ڈرامہ کے ذریعے ہماری یہی کوشش تھی کہ بے روزگار افراد کے مسائل اُجاگر ہو سکے۔ اس ڈرامہ میں میرا رول شفع مُت رہا ہے۔ ڈرامہ میں پڑھ لکھ لکر مجھے نوکری نہیں ملتی ہے اور در در کی ٹھوکرے کھا کر آخر میں مسافر کشمیری میںجسکوہم مُت کہتے ہیں، بن جاتا ہوں۔ اد اکار نے حس کر مزید کہا کہ اب رئیل لائف میں بھی کچھ لوگ مجھے شفع مُت کے نام سے پکارتے ہیں چونکہ میں اداکار ہوں اور اداکار کو لوگ اس نام سے پکاریں گے ادکار کو خوشی ملتی ہے جب ایک اداکار کی اداکا ری دوسروںکو پسند آتی ہے۔ نمائندے کے ساتھ انٹریو میں اداکار جا وید خان نے مزیدکہا کہ کئی بالی ووڈ فلموں میں بھی کام کر چکا ہوں۔بالی ووڈ میں سب سے پہلے فلم حیدر میں کام کرنے کا موقع ملا۔ اسکے بعد سلمان خان کے ساتھ بجرنگی بھائی جان فلم میں کام کیا اور اس فلم میں میرا رول آزاد کشمیر پاکستان کا بس ڈرائیور رہا ہے۔ انہوں نے کہا کہ بجرنگی بھائی جان فلم نے میری پہچان بنا دی نہ صرف جموںو کشمیر بلکہ وادی سے باہر بھی لوگ مجھے اس فلم سے جاننے لگے اور میرے کام کو سراہاتے ہوئے بہت پیار دیا۔ انہوں نے کہا کہ میں بجرنگی بھائی جان کے علاوہ دیگر کئی فلموں میںبھی کام کیا ہے نمائندے کے ساتھ ایک انٹریو میں سرینگر کے معروف اداکار جا وید خان نے کہا کہ سال2017-18میں کلچرل اکیڈیمی سے سٹیٹ ایوارڈ بھی ملا ہے۔ ہارون نشاط سرینگر ضلع سے تعلق رکھنے والے اداکار جا وید خان نے مزید کہا کہ یہاں کے اداکاروں کو کئی طرح کے مسائل و مشکلات کا سامنا ہے۔ جسکی طرف سرکار توجہ نہیں دے رہی ہے۔ بہترین ٹیلنٹ ہونے کے باوجود بھی یہاں کے آرٹسٹ در در کی ٹھوکرے کھا رہے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ وادی کے باہر ایک اداکار کو عزت کی جا تی ہے اور ہر طرح کا سپورٹ اور مدد فراہم کیا جاتا ہے۔ یہاں اور وادی کے باہر آسمان زمین کا فرق ہے۔ ادا کار کا مزید کہنا تھا کہ کسی بھی ملک کی پہچان وہاں کا کلچر ، ثقافت ، ہیرٹیج ہو تا ہے اور اس کو ریپریزنٹ برقرار رکھنے کیلئے آرٹسٹ کا رول اہم ہو تا ہے۔ لہذا اس آرٹسٹ کی قدر کی جائے اور ہرطرح کا سپورٹ اور مالی مدت فراہم کیا جائے تاکہ وہ اپنے ٹیلنٹ سے کلچر ثقافت کو زند ہ رکھ سکے۔ انہوں نے نوجوانوں سے اپیل کی ہے کہ وہ اپنی توجہ پڑھائی پر دیں۔نمائندے تنہا ایاز کے مطابق جا وید خان اگر چہ خانیار سرینگر میں پیدا ہوئے تھے تاہم وہاں سے انکی والد نے نکل مکانی کر کے ہارون سرینگر میں سکونت اختیار پذیر کی اور پھر یہی ہو کر رہے اور یہاں ہی اداکار جا وید خان نے بچپن گذارا اور پڑھائی بھی یہاں ہی حاصل کی۔ فلم بجرنگی بھائی جان میں کام کرنے والے مذکورہ اداکار کو دور دور تک پہچانا جاتا ہے۔

متعلقہ خبریں

گزشتہ شب گلشن کلچرل فورم کشمیراور لسہ خان فدا فاؤنڈیشن نے مشترکہ طور سلسلہ قادریہ وفاضلی کے معروف صوفی بزرگ اور.

تحریر: حافظ میر ابراھیم سلفی عشرتی گھر کی محبت کا مزا بھول گئے
کھا کے لندن کی ہوا عہد وفا بھول گئے
قوم کے غم.

آج یہاں سنور کلی پورہ ماگام میں گلشن کلچرل فورم کشمیرکے اہتمام سے ایک ادبی نشست بزم فریاد منعقد ہوئ۔ کئ مہینوں کے.

جدید دور میں گرمی دینے والے آلات کے باوجود بھی کانگڑی کی اہمیت برقرار
روایتی فیرن میں تبدیلی،بازاروں میں کوٹ.

آٹھ زونوں سے لڑکوں اور لڑکیوں نے حصہ لیا
پلوامہ/ تنہا ایاز /
یوتھ سروسز انیڈ سپورٹس کی مجانب سے میکس ویل کالج.