ویڑیو

ای پیپر

اہم خبریں

اڈوانی، جوشی ، اوما بھارتی سمیت تمام ملزمان کوبری کردیا سرینگر/30ستمبر28 سال.

ایمنسٹی انٹرنیشنل نے منظر عام پر لانا چاہا تو انہیں توبھارت نے دفاتر بند.

ضروری قانونی کارروائی کے بعد نعشیں لواحقین کو سونپ دی جائے گی/ آئی جی کشمیر.

’سیکورٹی فورسز ملی ٹینٹوں پر غالب/’رواں برس کے ابتدائی 6ماہ کامیاب ترین ثابت /دلباغ سنگھ

   110 Views   |      |   Wednesday, September, 30, 2020

سرینگر ؍25،جون؍جموں وکشمیر پولیس کے سربراہ دلباغ سنگھ نے کہا ہے کہ رواں برس کے ابتدائی6ماہ سیکیورٹی فورسز کیلئے کامیاب ترین ثابت ہوئے جبکہ سیکیورٹی فورسز مکمل طور پر ملی ٹنٹوں پر غالب ہیں ۔انہوں نے کہا ’جتنے نوجوان جنگجوئوں کے صف میں شامل ہوتے ہیں ، اُس سے زیادہ مارے جاتے ہیں اور جنگجو مخالف کارروائیوں کے دوران شہری ہلاکتیں نہ ہو ،اس کا خاص خیال رکھا جاتا ہے ‘۔اطلاعات کے مطابق ایک نجی نیوز چینل کو دئے گئے تفصیلی انٹر یو میں جموں وکشمیر پولیس کے چیف دلباغ سنگھ نے کہا کہ جموں وکشمیر خاص طور پر وادی کشمیر میں ملی ٹینسی مخالف کارروائیوں کے دوران شہری ہلاکتیں نہ ہو ،اس کا خاص خیال رکھا جاتا ہے جبکہ شہریوں کے تحفظ کو یقینی بنانا سیکیورٹی فورسز کی پہلی ترجیح ہے ۔ ان کا کہناتھا ’جہاں تک ملی ٹینسی مخالف کارروائیوں کا تعلق ہے ،2020کے ابتدائی6ماہ کامیاب ترین ثابت ہوئے ‘۔دلباغ سنگھ نے کہا ’نہ صرف اعلیٰ ترین ملی ٹنٹ کمانڈر وں کی ہلاکت بلکہ119ملی ٹنٹوں کو زیر کرنے کیلئے رواں برس کے ابتدائی6ماہ میں پولیس نے نمایاں اور کلیدی رول ادا کیا‘ ۔جموں وکشمیر پولیس چیف ،دلباغ سنگھ کا خیال ہے کہ بہت ساری وجوہات ہیں جسکی وجہ سے سال2020کشمیر میں انسداد ملی ٹینسی مخالف کارروائیوں کے حوالے سے اب تک خاصا اچھا رہا ۔انہوں نے کہا کہ ملی ٹنٹ مخالف کارروائیوں کے دوران عام شہری اور فورسز کے جانی نقصان سے بچنے کیلئے خاص حکمت عملی ترتیب دی گئی ہے ،جس کے مثبت اور ثمر آور نتائج برآمد ہوئے ۔دلباغ سنگھ نے کہا’ملی ٹینٹ مخالف کارروائیوں کے دوران شہری ہلاکتیں نہ ہو ،اس کو یقینی بنانے کیلئے خاص توجہ مرکوز کی ہوئی ہے ‘۔ان کا کہناتھا کہ یہ ایک وجہ ہے جسکی وجہ سے سیکیورٹی فورسز کو ملی ٹنٹوں کے خلاف بڑی بڑی کامیابیاں حاصل ہوئیں ۔دلباغ سنگھ نے کہا’اس برس سیکیورٹی کو کئی کامیابیاں حاصل ہوئیں ،پلوامہ جیسے آئی ای ڈی خود کش دھماکے کو ٹال دیا گیا ،حزب المجاہدین کے چیف کمانڈر ریاض نائیکو اور دیگر ملی ٹنٹ کمانڈر مارے گئے ،کیا آپ نہیں لگ رہا ہے کہ یہ پولیس کیلئے اس سال کی اعلیٰ ترین کامیابیاں نہیں ہیں ؟‘۔پولیس چیف نے اپنی بات جاری رکھتے ہوئے انٹر ویو میں کہا ’گزشتہ 4برسوں میں پہلی مرتبہ جتنے جنگجوئوں کے صف میں شامل ہوئے ،اُس سے زیادہ مارے گئے ،اور یہ خوشی کی بات ہے ‘۔انہوں نے کہا ’آپ گزشتہ4برسوں کے اعداد وشمار اٹھائے ،سال 2018میں سیکیورٹی نے260ملی ٹنٹ مختلف آپریشنز میں مارے ،2019میں 160ملی ٹنٹ مارے گئے ،رواں برس ابھی تک سیکیورٹی نے119ملی ٹنٹ مارے ‘۔انہوں نے کہا ’مقامی نوجوانوں میں ملی ٹینسی کا رجحان کم ہو رہا ہے ،گزشتہ برسوں کے مقابلے میں اس برس قلیل تعداد ہی ملی ٹنٹوں کے صف میں شامل ہوئے ،اس برس مقامی اور غیر مقامی ،دونوں مارے گئے ،یہ ایک اچھا رجحان ہے ،ہم اس کو برقرار رکھنا چاہتے ہیں ‘۔ایک سوال کے جواب پولیس چیف نے کہا ’ہمارا یہ کام نہیں کہ ایک ماہ یا دو ماہ میں کیا ،کیا؟،گزشتہ دو ،تین برسوں کے دوران ہم نے مئوثر اقدامات کئے ،ہم نے اپنا انٹلی جینس نیٹ ورک مضبوط کیا اور سیکیورٹی فورسز کے درمیان ہم آہنگی کو ترجیح دی ‘۔انہوں نے کہا ’گزشتہ دو تین برسوں میں عام شہر یواور فورسز کی ہلاکتوں میں نمایاں کمی آئی ،جس نے ہمارے اعتماد کو مزید پختہ کیا ‘۔ دلباغ سنگھ نے مزید کہا’گزشتہ کئی ماہ میں امن و قانون کی صورتحال کو دیکھیں ، ریاض نائیکو ،زاکر موسیٰ ،جنید صحرائی ،برہان کوکا کی ہلاکت کے بعد وادی کشمیر میں امن وقانون کی صورتحال پہلے سے بہتر ہوئی ،ہم ہجوم کو جمع ہونے کی اجازت نہیں دے رہے اور فورسز پر پتھرائو کرنے والوں کو بھی روکا ،ہم ہر ایو نٹ کے بعد نئی منصو بہ ترتیب دیتے ہیں ،پیشگی اقدامات اٹھائے جارہے ہیں ،تاکہ صورتحال کو کنٹرول میں رکھ سکے ،نتائج کیا ہیں؟ ،وہ سب کے سامنے ہیں ‘۔دلباغ سنگھ نے کہا ’جہاں تک عام شہریوں کے تحفظ کا سوال ہے ،ہم نے مئوثر اور اقد امات کئے ،تاکہ کہیں سے کوئی سیکیورٹی فورسز کے خلاف کوئی شکایت نہ ہو ،اب عام شہریوں اور فورسز کے درمیان جھڑپیں نہیں ہوتی ،کوئی ایسا واقعہ نہیں ،جہاں عوامی شکایت سامنے آئی ہو ،جھڑپوں کے دوران عوامی اعتماد کو بھی حاصل کیا جاتا ہے ‘۔ان کا کہناتھا معرکہ آرائیوں کے دوران عام شہریوں کی ہلاکتیں نہ ہو ،ہم اس کا خاص خیال رکھتے ہیں ،سرینگر میں ہم نے معرکہ آرائیوں کے دوران صورتحال کو کس طرح کنٹرول میں رکھا ،یہ100فیصد پولیس آپریشنز تھے ،اونتی پورہ میں ملی ٹینٹ مسجد میں داخل ہوئے ،ہم نے سا رے واقعہ کو حساسیت کیساتھ لیا اور نمٹایا ۔مسجد کو کوئی نقصان نہیں ہوا ،مقامی لو گوں نے سراہنا کی ،اس سے ہمیں لوگوں تک پہنچنے میں مدد مل رہی ہے ۔ایک اور سوال کے جواب میں دلباغ سنگھ نے کہا ’ جہاں تک امن وقانون کی منیجمنٹ کا تعلق ہے ،تشدد کے واقعات میں80فیصد کمی آئی ،ہمارا انٹلی جینس نیٹ ورک اور خفیہ اطلاعات کی روانی یا بہائو اس وقت سب سے اعلیٰ ہے ،99فیصد خفیہ اطلاعات پولیس سے ہی حاصل ہورہی ہیں ‘۔کے این ایس

متعلقہ خبریں

اڈوانی، جوشی ، اوما بھارتی سمیت تمام ملزمان کوبری کردیا سرینگر/30ستمبر28 سال پرانے بابری مسجد انہدام کیس میں سی بی.

ایمنسٹی انٹرنیشنل نے منظر عام پر لانا چاہا تو انہیں توبھارت نے دفاتر بند کردیئے / قریشی سرینگر/30ستمبر/پاکستان کے.

ضروری قانونی کارروائی کے بعد نعشیں لواحقین کو سونپ دی جائے گی/ آئی جی کشمیر ، لواحقین مشاورات کیلئے طلب سرینگر/30ستمبر/امشی.

دینی ، سماجی اور ادبی تنظیموں کا رنج وغم کا اظہار پلوامہ/ تنہا ایاز/ قصبہ پلوامہ کے پرچھو علاقے کی ایک نیک سیرت خاتون.

سینکڑوں لوگوں نے اپنا علاج و معالجہ کروایا اور مفت ادویات حاصل کی پلوامہ/ تنہا ایاز/ سول ڈیفنس سرینگر احسان فائونڈیشن.