ویڑیو

ای پیپر

اہم خبریں

محبوبہ مفتی کو ملک سے بغاوت کرنے کی پادائش میں فوری طورپر گرفتار کیا جانا.

محبوبہ مفتی علیحدگی پسندوں کی بولی بول رہی ہیں۔ پیپلز الائنس کی کوئی عوامی.

عصمت دری کرنے والوں کے حق میں ترنگا ریلی نکال کر بھاجپا نے کی ترنگے کی توہین:محبوبہ.

سیاسی ہلچل کے بیچ ڈاکٹر حسیب درابو کابینہ سے باہر

   259 Views   |      |   Saturday, October, 24, 2020

سرینگر// مسئلہ کشمیرسے متعلق متنازعہ بیان کولیکرسیاسی ہلچل کے بیچ وزیراعلیٰ محبوبہ مفتی نے غیرمعمولی فیصلہ لیتے ہوئے وزیرخزانہ ڈاکٹرحسیب درابوکوکابینہ سے باہرکاراستہ دکھادیا۔ معلوم ہواکہ وزیراعلیٰ کے نئی دہلی سے سرینگرپہنچنے کے فوراًبعدیہ غیرمعمولی فیصلہ لیاگیا،اورفوری طوراس سلسلے میں راج بھون جموں کوایک خطہ روانہ کرکے فیصلے کی جانکاری فراہم کی گئی ۔پی ڈی پی کے نائب صدرسرتاج مدنی نے حسیب درابوکوکابینہ سے نکال باہرکرنے کی تصدیق کی جبکہ وزیرتعلیم سیدالطاف بخاری نے کہاکہ ڈاکٹردرابوکوپارٹی میں آئندہ رکھنے یانہ رکھنے کافیصلہ بھی جلدلیاجائیگا۔ادھرسابق وزیراعلیٰ عمرعبداللہ ،سابق مرکزی وزیرپروفیسرسیف الدین سوزاوردیگرکئی اپوزیشن لیڈران نے کہاکہ سیاسی تنازعے میں اُلجھناڈاکٹردرابوکومہنگاپڑا۔تاہم عمرعبداللہ نے سوالیہ اندازمیں کہاکہ یہ دیکھنادلچسپ ہوگاکہ ریاست کانیاوزیرخزانہ کون ہوگا؟۔تاہم بی جے پی نے ڈاکٹردرابوکے بیان کادفاع کرتے ہوئے کہاکہ اصل مسئلہ پاکستانی زیرانتظام کشمیر کاہے ۔خیال رہے کشمیرکوسیاسی نہیں ایک سماجی مسئلہ قراردئیے جانے پراتوارکوپی ڈی پی کی انضباطی کمیٹی نے ڈاکٹرحسیب درابوسے جواب طلب کیاتھاجبکہ پارٹی کے نائب صدرسرتاج مدنی نے حسیب درابوکواپنامتنازعہ بیان واپس لینے کامشورہ دیتے ہوئے یہ واضح کیاتھاکہ پی ڈی پی کاکشمیرمسئلے سے متعلق موقف اتل ہے اوریہ کہ اس مسئلے کاحل پارٹی کابنیادی ایجنڈاہے ۔نمائندے کے مطابق پی ڈی پی ،بی جے پی مخلوط سرکارکے دورمیں اسوقت ایک بڑاسیاسی دھماکہ ہواجب کشمیرمسئلے کے بارے میں متنازعہ بیان دینے کی پاداش میں پی ڈی پی نے پارٹی کے ایک سینئرلیڈرڈاکٹرحسیب درابو کووزارت خزانہ سے ہٹاتے ہوئے ریاستی کابینہ سے بھی نکال باہرکردیا۔بتایاجاتاہے کہ سوموارکوصبح وزیراعلیٰ محبوبہ مفتی نئی دہلی سے سیدھے سری نگرپہنچیں اورانہوں نے یہاں اپنی سرکاری رہائش گاہ واقع گپکارروڑمیں پارٹی کے کچھ سینئرلیڈروں کیساتھ ڈاکٹردرابوکے متنازعہ بیان سے پیداشدہ سیاسی ہلچل کوزیرغورلایا۔پی ڈی پی کے ایک سینئرلیڈرنے نام مخفی رکھنے کی شرط پربتایاکہ وزیراعلیٰ خودبھی ڈاکٹردرابوکے بیان پرسخت ناراض ہیں اورانہوں نے پارٹی لیڈروں کوخبردارکیاکہ ایسے غیرذمہ دارانہ بیانات سے پارٹی کوکشمیروادی میں سخت نقصان پہنچ سکتاہے ۔پارٹی کے نائب صدرسرتاج مدنی نے بتایاکہ کچھ وقت تک پارٹی کے سینئرلیدروں کیساتھ صلاح مشورے کے بعدوزیراعلیٰ نے یہ سخت فیصلہ لیاکہ ڈاکٹرحسیب احمددرابوکوکابینہ سے نکالاجائے ،اوراسکے بعدفوری طوروزیراعلیٰ محبوبہ مفتی نے اس فیصلے کے حوالے سے ایک خط راج بھون جموں کوروانہ کردیاجس میں ریاستی گورنر کویہ جانکاری فراہم کی گئی کہ پی ڈی پی نے ڈاکٹرحسیب درابوکوکابینہ سے واپس لانے کاحتمی فیصلہ لیاہے ۔اس دوران معلوم ہواکہ پہلے پارٹی لیدرشپ نے یہ فیصلہ لیاتھاکہ نئی دہلی سے سری نگرپہنچنے کے بعدڈاکٹرحسیب درابوسے متنازعہ بیان کے بارے میں جواب طلب کیاجائیگالیکن بعدازاں اس بیان کولیکرپیداشدہ سیاسی ہلچل اورکشمیرمیں پارٹی کوممکنہ طورپہنچنے والے نقصان کوملحوظ نظررکھتے ہوئے ڈاکٹردرابوکوبلاتاخیرکابینہ سے نکال باہرکرنے کافیصلہ لیاگیا،اوراسکے بعدگورنرکوفیصلے پرمبنی خط ارسال کیاگیا۔پی ڈی پی لیڈرکے بقول راج بھون جموں بھیجے گئے خط میں گورنرکواسبات سے آگاہ کیاگیاکہ ڈاکٹردرابوکوہٹانے کافیصلہ حتمی ہے ۔غورطلب ہے کہ ڈاکٹرحسیب درابونے سنیچرکونئی دہلی میں منعقدہ ایک کانفرنس کے دوران کہاتھاکہ کشمیرکوئی سیاسی مسئلہ نہیں بلکہ محض ایک سماجی مسئلہ ہے ۔اس دوران پی ڈی پی کے سینئرلیڈراورریاستی وزیرتعلیم سیدالطاف بخاری نے کہاکہ پارٹی کاسیاسی ایجنڈاسب سے مقدم ہے ۔انہوں نے ڈاکٹردرابوکوکابینہ سے نکال باہرکرنے کی تصدیق کرتے ہوئے بتایاکہ موصوف کوپارٹی میں آئندہ رکھنے یانہ رکھنے کافیصلہ بھی جلدلیاجائیگا۔الطاف بخاری نے کہاکہ حسیب درابوکیخلاف لیاگیاسخت فیصلہ پارٹی کے سبھی لیڈروں اورذمہ داروں کیلئے ایک واضح پیغام ہے کہ پی ڈی پی کاایجنڈاسب سے مقدم ہے ۔ادھرسابق وزیراعلیٰ عمرعبداللہ ،سابق مرکزی وزیرپروفیسرسیف الدین سوزاوردیگرکئی اپوزیشن لیڈران نے کہاکہ سیاسی تنازعے میں اُلجھناڈاکٹردرابوکومہنگاپڑا۔تاہم عمرعبداللہ نے سوالیہ اندازمیں کہاکہ یہ دیکھنادلچسپ ہوگاکہ ریاست کانیاوزیرخزانہ کون ہوگا؟۔تاہم بی جے پی نے ڈاکٹردرابوکے بیان کادفاع کرتے ہوئے کہاکہ اصل مسئلہ پاکستانی زیرانتظام کشمیر کاہے۔بی جے پی کے جنرل سیکرٹری اشوک کول نے کے این ایس کیساتھ بات کرتے ہوئے کہاکہ ڈاکٹرحسیب درابونے کچھ غلط نہیں کہا۔انہوں نے پی ڈی پی لیڈرکے متنازعہ بیان کادفاع کرتے ہوئے کہاکہ کشمیرایک مسئلہ ہے لیکن وہ پاکستانی زیرانتظام کشمیر کولیکرہے۔اشوک کول نے کہاکہ ہم جموں وکشمیرکوبھارت کااٹوٹ انگ مانتے ہیں اورہمارے نزدیک اگرکوئی مسئلہ یاتنازعہ ہے تووہ پاکستان کے زیرقبضہ کشمیرکے حصے کاہے۔سیاسی ہلچل کے بیچ ڈاکٹر حسیب درابو کابینہ سے باہر

متعلقہ خبریں

محبوبہ مفتی کو ملک سے بغاوت کرنے کی پادائش میں فوری طورپر گرفتار کیا جانا چاہئے /رویندر رینا
سرینگر24//اکتوبر///.

محبوبہ مفتی علیحدگی پسندوں کی بولی بول رہی ہیں۔ پیپلز الائنس کی کوئی عوامی اہمیت نہیں ہے /مرکزی وزیر جتندر سنگھ

عصمت دری کرنے والوں کے حق میں ترنگا ریلی نکال کر بھاجپا نے کی ترنگے کی توہین:محبوبہ مفتی سرینگر؍24، اکتوبر ؍ ؍ پی.

تنظیمی ڈھانچہ تشکیل ،ڈاکٹر فاروق سربراہ ،سجاد غنی لون ترجمان مقرر ، جموں وکشمیرکا پرچم اتحاد کی علامت ہوگا
عوامی.

افسر شاہی لوگوں کیلئے وبال جان ، انتظامیہ کا زمینی سطح پر کوئی نام و نشان نہیں: ساگر
سرینگر؍23، اکتوبر ؍ ؍ جموں.