ویڑیو

ای پیپر

اہم خبریں

آج یہاں سنور کلی پورہ ماگام میں گلشن کلچرل فورم کشمیرکے اہتمام سے ایک ادبی.

جدید دور میں گرمی دینے والے آلات کے باوجود بھی کانگڑی کی اہمیت برقرار

آٹھ زونوں سے لڑکوں اور لڑکیوں نے حصہ لیا
پلوامہ/ تنہا ایاز /
یوتھ سروسز.

دفعہ370کی تنسیخ کے بعد پہلی مرتبہ این سی صدرنے کی میٹنگ منعقد

   151 Views   |      |   Saturday, January, 23, 2021

عوام اتحاد برائے گپکار اعلامیہ تینوں خطوں کی مشترکہ جدوجہدکا پلیٹ فارم: ڈاکٹر فاروق عبداللہ

ساگر،وانی ،شفیع اور راتھر پہنچے ڈاکٹر فاروق کی رہائش گاہ پر ،میٹنگ کا سلسلہ جاری ،آج ہوگا مرحلہ دوم ،مزید لیڈرا ن کی شرکت متوقع

سرینگر؍20 ،اگست ؍؍ دفعہ370اور35(اے) کی تنسیخ کے بعد پہلی مرتبہ جمعرات کو نیشنل کانفرنس کے صدر کی صدارت میں ایک غیر معمولی اجلاس منعقد ہوا ،جس میں پارٹی کے4سینئر لیڈران نے شرکت کی ۔اجلاس میں کئی امور زیر بحث آئے جبکہ میٹنگ کا سلسلہ ہنوز جاری اور آج یعنی جمعہ کو میٹنگ کا دوسرا رائونڈ ہوگا ۔کشمیر نیوز سروس کے مطابق عدالت عالیہ میں حکومت کی جانب سے نیشنل کانفر نس کے لیڈران کی نظر بندی سے متعلق اپنائے گئے موقف کو جاننے کیلئے جمعرات کو ڈاکٹر فاروق عبداللہ نے اپنی رہائش گاہ پر 4سینئر پارٹی لیڈران کا ایک غیر معمولی اجلاس طلب کیا تھا اور اس میں شرکت کرنے کیلئے پارٹی کے چار سینئر لیڈران عبدالرحیم راتھر پارٹی جنرل سیکریٹری ،علی محمد ساگر ،محمد شفیع اوڑی اورصوبائی صدر ناصر اسلم وانی کو مد عو کیا گیا تھا ۔چنانچہ خانہ نظر بندی ختم ہونے کیساتھ ہی نیشنل کا نفرنس کے یہ چاروں لیڈران ڈاکٹر فاروق عبداللہ کی رہائش گاہ واقع گپکار روڑ سرینگر پہنچ گئے ،جہاں انہوں نے پارٹی صدر کی صدارت میں منعقدہ غیر معمولی اجلاس میں شرکت کی ۔ذرائع نے بتایا کہ میٹنگ جمعرات کو سہ پہر5بجے منعقد ہوئی ،جس میں مرکزی حکومت کے جموں وکشمیر کی تقسیم وتنظیم نو سے متعلق لئے گئے فیصلہ جات ، نئی حلقہ بندی کے معاملے ،پارٹی امور اور آئندہ کے لائحہ عمل کے حوالے سے تبادلہ خیال کیا گیا ۔ڈاکٹر فاروق عبداللہ نے کہا کہ چاروں لیڈران اُنکی رہائش گاہ پہنچے ،جس دوران کئی امور پر تبادلہ خیال کیا گیا ۔انہوں نے کہا کہ آج یعنی جمعہ کو مزید پانچ لیڈران کو جاری اجلاس میں شرکت کی غرض سے مدعو کیا گیا ۔ان کا کہناتھا کہ یہ اجلاس آئندہ چند روز تک جاری رہے گا ۔اس سے قبل پارٹی ترجمان نے ایک بیان بھی جاری کیا جس میں بتایا گیا ہے کہ نیشنل کانفرنس نے حکومت کے اُس موقف کا نوٹس لیا ہے جو پارٹی صدر اور نائب صدر کی طرف سے پارٹی کے مختلف رہنماؤں کی غیر قانونی خانہ نظربندی ختم کرنے کو یقینی بنانے کے لئے حبس بیجا کے تحت دائر عرضی کے معاملات میں حکومت نے ہائی کورٹ کے سامنے اختیار کیا ہے ۔عدالت عالیہ میں حکومت کی طرف سے دائر جواب کا مطالعہ کرنے کے بعد پارٹی نے اس بات کا نوٹس لیا ہے کہ حکومت نے اپنے جواب میں کہا ہے کہ نیشنل کانفرنس کا کوئی بھی لیڈر نظربند نہیں ہے اور تمام لیڈران ضروری سیکورٹی انتظامات کے تحت کہیں بھی آنے جانے کیلئے آزاد ہیں۔ عدالت عالیہ میں اختیار کئے گئے حکومتی مؤقف پر مکمل طورپر انحصار کرتے ہوئے نیشنل کانفرنس کے صدر ڈاکٹر فاروق عبداللہ نے پارٹی کے سینئر لیڈران بشمول علی محمدساگر، عبدالرحیم راتھر، محمد شفیع اوڑی اور ناصر اسلم وانی کو 20اگست2020شام کے 5بجے اپنی رہائش گاہ پر ایک میٹنگ کیلئے مدعو کیا ہے اور توقع کی ہے کہ حکومت اس بار کوئی رکاوٹ کیلئے ہیلے بہانے یا بے تکی باتیں نہیں کرے گی۔ پارٹی موجودہ وبائی صورتحال کو ذہن میں رکھے ہوئے ہے اور احتیابی تدابیر کو ملحوظ نظر رکھتے ہوئے فی میٹنگ 4ممبران کے درمیان کی جائے گی اور تمام متعلقین کی طرف سے ہر قسم کے رہنما خطوط پر سختی سے عملدرآمد ہوگا۔ پارٹی کو امید ہے کہ حراست میں رکھے گئے ممبروں کی آزادی اب مطلق ہے اور اجلاس مقررہ دن پر کامیابی کے ساتھ منعقد ہوگا۔یاد رہے کہ گذشتہ برس5اگست جموں وکشمیر کی تقسیم وتنظیم نو کے فیصلہ جات سے قبل سینکڑوں سیاسی رہنمائوں کو حراست میں لیکر نظر بند رکھا گیا ،جن میں سے اب بیشتر خانہ نظر بند ہیں ۔

متعلقہ خبریں

تحریر: رشید پروین ؔسوپور سلسلہ روزو شب نقش گر حادثات
سلسلہ روزو شب اصل حیات و ممات
سلسلہ روزو شب تارِ حریر.

بہ گلشن بدرنی چھس پننہ تہ پننہ انجمن گلشن کلچرل فورم کشمیرکین تمام ارکانن ہندہ طرفہ کشیر ہندین سرکردہ تہ نمایندہ.

گزشتہ شب گلشن کلچرل فورم کشمیراور لسہ خان فدا فاؤنڈیشن نے مشترکہ طور سلسلہ قادریہ وفاضلی کے معروف صوفی بزرگ اور.

تحریر: حافظ میر ابراھیم سلفی عشرتی گھر کی محبت کا مزا بھول گئے
کھا کے لندن کی ہوا عہد وفا بھول گئے
قوم کے غم.

آج یہاں سنور کلی پورہ ماگام میں گلشن کلچرل فورم کشمیرکے اہتمام سے ایک ادبی نشست بزم فریاد منعقد ہوئ۔ کئ مہینوں کے.