ویڑیو

ای پیپر

اہم خبریں

محبوبہ مفتی کو ملک سے بغاوت کرنے کی پادائش میں فوری طورپر گرفتار کیا جانا.

محبوبہ مفتی علیحدگی پسندوں کی بولی بول رہی ہیں۔ پیپلز الائنس کی کوئی عوامی.

عصمت دری کرنے والوں کے حق میں ترنگا ریلی نکال کر بھاجپا نے کی ترنگے کی توہین:محبوبہ.

حسیب درابو کے بیان پر سیاسی تنازعہ کھڑا

درابو کو بیان واپس لینے کی ہدایت واضح کردے جموںوکشمیر ایک سیاسی مسئلہ ہے

   299 Views   |      |   Tuesday, October, 27, 2020

سرینگر// مسئلہ کشمیرسے متعلق حسیب درابوکے بیان پرسیاسی تنازعہ کھڑاہوگیاکیونکہ جہاں پی ڈی پی نے موصوف کی جانب سے کشمیرکوسیاسی مسئلہ نہ قراردئیے جانے سے لاتعلقی ظاہرکردی ،وہیں خاص اپوزیشن جماعت نیشنل کانفرنس نے اس سلسلے میں وزیراعلیٰ اورپی ڈی پی صدرمحبوبہ مفتی سے جواب طلب کیا۔پی ڈی پی کے نائب صدرسرتاج مدنی نے ڈاکٹرحسیب درابوکواپنابیان واپس لینے کی ہدایت دیتے ہوئے یہ واضح کردیاکہ جموں وکشمیرایک سیاسی مسئلہ ہے ،اوراسکاحل پی ڈی پی کابنیادی ایجنڈاہے۔ادھرنیشنل کانفرنس کے جنرل سیکرٹری علی محمدساگرنے ڈاکٹردرابوکے بیان کوانتہائی حیران کن اورشرمناک قراردیتے ہوئے وزیراعلیٰ محبوبہ مفتی سے اسبات کاجواب طلب کیاکہ کیاپی ڈی پی نے کشمیرسے متعلق اپنادیرینہ موقف بھی تیاگ دیاہے۔کے این ایس کے مطابق حکمران جماعت پی ڈی پی نے پارٹی کے سینئرلیڈراورریاستی وزیرخزانہ ڈاکٹرحسیب درابوکے اُس بیان سے لاتعلقی ظاہرکردی ،جس میں موصوف نے گزشتہ روزکہاتھاکہ کشمیرنہ توشورش زدہ علاقہ ہے اور نہ کشمیرکوئی سیاسی مسئلہ ہے ۔پارٹی کے نائب صدرسرتاج مدنی نے اتوارکوجاری کردہ اپنے بیان میں ڈاکٹردرابوسے متنازعہ بیان واپس لینے کوکہا۔انہوں نے کہاکہ پی ڈی پی کاموقف واضح ہے کہ جموں وکشمیرایک سیاسی مسئلہ ہے ۔سرتاج مدنی نے کہاکہ اس مسئلے کاحل پارٹی کابنیادی موقف ہے ۔انہوں نے کہاکہ پی ڈی پی لیڈروں کوحساس معاملات اورپارٹی کے بنیادی موقف سے متعلق اظہارخیال کرتے وقت ہوشیاررہنے کیساتھ ساتھ احتیاط سے بھی کام لیناچاہئے تاکہ بلاوجہ کوئی سیاسی تنازعہ پیدانہ ہوجائے ۔سرتاج مدنی نے واضح کیاکہ پارٹی کے بانی مرحوم مفتی محمدسعید کی یہ ہمہ وقت کوشش اورجدوجہدرہی کہ مسئلہ کشمیرکوسیاسی طورپرحل کرایاجائے اوراس مقصدسے انہوں نے سال2002سے 2005تک بھارت اورپاکستان کے درمیان مذاکراتی عمل بحال کرانے میں اہم رول اداکیا۔پی ڈی پی نائب صدر نے کہاکہ جب پارٹی نے مسئلہ کشمیرکے حل کی وکالت کرنے کیساتھ ساتھ کشمیری عوام کے جذبات واحساسات کی بات کی تواسی بناء پرریاستی عوام بالخصوص اہل وادی نے اس پارٹی کواپناترجمان مانا۔انہوں نے کہاکہ پی ڈی پی ہمیشہ کہتی آئی ہے کہ جموں وکشمیرمیں عزت کیساتھ امن قائم ہوناچاہئے اوراس سے صاف ظاہرہوتاہے کہ پارٹی لیڈرشپ کابنیادی موقف اورایجنڈایہی ہے کہ کشمیرایک سیاسی مسئلہ ہے جسکوسیاسی طورپرہی حل کیاجاسکتاہے ۔اس دوران خاص اپوزیشن جماعت نیشنل کانفرنس نے مسئلہ کشمیرسے متعلق ریاستی وزیرخزانہ ڈاکٹرحسیب درابوکے متنازعہ بیان پرسخت ردعمل ظاہرکرتے ہوئے حکمران جماعت کی صدراورریاست کی خاتون وزیراعلیٰ محبوبہ مفتی سے جواب طلب کیاہے ۔پارٹی ہیڈکوارٹرنوائے صبح کمپلیکس میں ناصراسلم وانی سمیت کئی لیڈروں کے ہمراہ ایک پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے نیشنل کانفرنس کے جنرل سیکرٹری علی محمدساگرنے ڈاکٹردرابوکے بیان کوانتہائی حیران کن اورشرمناک قراردیتے ہوئے وزیراعلیٰ محبوبہ مفتی سے اسبات کاجواب طلب کیاکہ کیاپی ڈی پی نے کشمیرسے متعلق اپنادیرینہ موقف بھی تیاگ دیاہے۔انہوں نے کہاکہ یہ بات انتہائی شرمناک اورافسوسناک ہے کہ برسوں تک مسئلہ کشمیرکاراگ الاپنے کے بعدپی ڈی پی کہتی ہے کہ کشمیرکوئی سیاسی مسئلہ ہی نہیں ۔علی محمدساگر نے کہاکہ کشمیرمسئلے کی وجہ سے ہی ہزاروں جانیں تلف ہوئیں اورریاست جموں وکشمیرکوہرسطح پرمشکلات کاسامناکرناپڑرہاہے اورایسے میں یہ بات حیران کن ہے کہ ان تلخ حقائق کے باجودپی ڈی پی نے یہ فتویٰ جاری کردیاکہ کشمیرکوئی سیاسی مسئلہ نہیں اوریہاں کوئی شورش جیسی صورتحال بھی نہیں ہے ۔انہوں نے کہاکہ پی ڈی پی لیڈرکی باتوں سے صاف ظاہرہوتاہے کہ اس پارٹی نے کشمیرمسئلے کابھی سوداکیاہے ۔علی محمدساگرنے سوالیہ اندازمیں کہاکہ اگرپی ڈی پی لیڈرکشمیرکوسیاسی نہیں صرف ایک سماجی مسئلہ مانتے ہیں تووہ خودمفتی سعیدمرحوم کے موقف کی نفی کررہے ہیں ۔انہوں نے کہاکہ ہم یہ سمجھ بیٹھے تھے کہ پی ڈی پی کاکشمیرمعاملے پرموقف صاف ہے لیکن اب ہم دیکھ رہے ہیں کہ اس پارٹی نے اپنے سیاسی موقف اورایجنڈے تک کوتیاگ دیاہے اورفروخت کردیاہے جوکہ شرمناک ہے۔این سی لیڈرنے پی ڈی پی کویوٹرن لینے کی عادی جماعت قراردیتے ہوئے کہاکہ اس پارٹی کاکوئی مستحکم موقف ہی نہیں ہے بلکہ یہ پارٹی رنگ بدلنے میں ماہرہے ۔انہوں نے کہاکہ ہم ڈاکٹردرابوکے بیان کی سخت الفاظ میں مذمت کرتے ہیں اورہم محبوبہ مفتی سے اسبات کاجواب بھی طلب کرتے ہیں کہ کیااُنکی پارٹی نے کشمیرمسئلے سے متعلق اپنادیرینہ موقف تک تیاگ دیاہے ۔علی محمدساگرنے کہاکہ ہم وزیراعلیٰ سے پوچھناچاہتے ہیں کہ اگرکشمیرسیاسی مسئلہ نہیں ،توپھریہاں ہزاروں جانیں کیوں تلف ہوئیں ،ابھی بھی تشدداوراموات کاسلسلہ جاری کیوں ہے ،کشمیرمیں بدامنی کیوں ہے ،اوریہاں سیاسی عدم استحکام کی صورتحال کیوں پائی جاتی ہے ۔اس موقعہ پرنیشنل کانفرنس کے صوبائی صدرناصراسلم وانی کاکہناتھاکہ عوام کوگمراہ کرنااورکشمیری عوام کودھوکہ دیناپی ڈی پی کاوطیرہ رہاہے اوراسی بنیادپراس پارٹی نے اقتداربھی حاصل کیا۔انہوں نے کہاکہ پی ڈی پی نہیں چاہتی کہ ریاست سیاسی اورانتظامی سطح پرمضبوط اوربااختیاربنے بلکہ یہ پارٹی اپنی سیاسی مضبوطی کیلئے کچھ بھی کرگزرنے کوتیاررہتی ہے۔

متعلقہ خبریں

محبوبہ مفتی کو ملک سے بغاوت کرنے کی پادائش میں فوری طورپر گرفتار کیا جانا چاہئے /رویندر رینا
سرینگر24//اکتوبر///.

محبوبہ مفتی علیحدگی پسندوں کی بولی بول رہی ہیں۔ پیپلز الائنس کی کوئی عوامی اہمیت نہیں ہے /مرکزی وزیر جتندر سنگھ

عصمت دری کرنے والوں کے حق میں ترنگا ریلی نکال کر بھاجپا نے کی ترنگے کی توہین:محبوبہ مفتی سرینگر؍24، اکتوبر ؍ ؍ پی.

تنظیمی ڈھانچہ تشکیل ،ڈاکٹر فاروق سربراہ ،سجاد غنی لون ترجمان مقرر ، جموں وکشمیرکا پرچم اتحاد کی علامت ہوگا
عوامی.

افسر شاہی لوگوں کیلئے وبال جان ، انتظامیہ کا زمینی سطح پر کوئی نام و نشان نہیں: ساگر
سرینگر؍23، اکتوبر ؍ ؍ جموں.