ویڑیو

ای پیپر

اہم خبریں

آج یہاں سنور کلی پورہ ماگام میں گلشن کلچرل فورم کشمیرکے اہتمام سے ایک ادبی.

جدید دور میں گرمی دینے والے آلات کے باوجود بھی کانگڑی کی اہمیت برقرار

آٹھ زونوں سے لڑکوں اور لڑکیوں نے حصہ لیا
پلوامہ/ تنہا ایاز /
یوتھ سروسز.

جموں کشمیر میں مادری زبان کو تقویت دی جائے گی

   228 Views   |      |   Friday, January, 15, 2021

کسی بھی ریاست یا مرکز کے زیر انتظام کنٹرول علاقے پر کوئی زبان مسلط نہیں کی جائے گی /صدر ہند
سرینگر /20ستمبر/صدر ہند رام ناتھ کوند نے اتوار کے روز کہا ہے کہ بھارت کی نئی قومی تعلیمی پالیسی سے جموں کشمیر میں مادری زبان کو تقویت دی جائے گی ۔ انہوں نے کہا کہ جموں کشمیر کے بچے ذہین اور باصلاحیت ہونے کے ساتھ ساتھ ترقی پسند بھی ہے ۔صدر ہند رام ناتھ کوند نے کہا ہے کہ نئی تعلیمی پالیسی کے نفاذ سے جموں کشمیر کو جدید تعلیم کا مرکز بنانے کیلئے کوشش ہونی چاہئے ۔ انہوں نے کہا کہ جموں کشمیر ذہین ، باصلاحیت اور ترقی پسند بچوں کا ذخیرہ ہے جنہیں جدید تعلیم کی ضرور ت ہے تاہم نئی تعلیمی پالیسی میں ’’مادری زبان کو تقویت دیکر اس کی حوصلہ افزائی ہونی چاہئے ۔ کرنٹ نیو زآف انڈیا کے مطابق نئی قومی تعلیمی پالیسی کو نافذ کرکے جموں وکشمیر کو علم ، جدت اور تعلیم کا مرکز بنانے کے لئے پرعزم کوششیں کی جانی چاہئیں۔صدر رام ناتھ کووند نے اتوار کے روز کہ جموں و کشمیر انتہائی ذہین ، باصلاحیت اور جدید بچوں کا ذخیرہ ہے اور نئی تعلیمی پالیسی کے نفاذ سے طالب علم کو زہنی صلاحیت میں فروغ ملے گا ۔ انہوں نے کہا کہ جنت کو علم ، جدت اور تعلیم کا مرکز بنانے کے لئے طے شدہ کوششیں کی جائیںکووند نے کہا کہ ان اقدامات سے جموں و کشمیر کو ایک بار پھر اگر فردوس زمین بروئے است ’’اگر زمین پر کہیں جنت ہے‘‘ کہلائے گا ۔جیسا کہ قرون وسطی کے زمانے میں اس کا حوالہ دیا گیا تھا۔ انہوں نے کہا کہ کشمیر کوہندوستان کے تاج کا ایک روشن زیور بنادیا جائے گا ۔ جموں وکشمیر میں بھارت کو ایک بے مثال آبادیاتی فائدہ ہے لیکن اس کا مثبت اندازہ تب ہی ہوسکتا ہے جب آبادی کا ایک خاص طبقہ تیار کرنے والے نوجوان ہنر مند ، پیشہ ورانہ صلاحیت کے حامل اور سب سے بڑھ کر حقیقی معنوں میں تعلیم یافتہ ہوجائیں۔ کلہنہ کی راجٹرنگینی اور مہیانہ بدھ مت کی مثالوں کا حوالہ دیتے ہوئے ، جن کے آثار کشمیر میں مقبول تھے ، صدر نے رائے دی کہ ہندوستان کی ثقافتی روایات کی تاریخ ان کو دھیان میں لائے بغیر نامکمل رہے گی۔ یہ ہماری روایت اور بھرپور ثقافتی ورثے کو سمجھنا ضروری ہے جو صرف ہماری مادری زبان میں ہی حاصل کیا جاسکتا ہے۔ انہوں نے کہا کہ یہ مادری زبان ہی نئی تعلیمی پالیسی میں حوصلہ افزائی کی جا رہی ہے کیونکہ یہ ہمارے ملک کے ثقافتی اخلاق پر عمل پیرا ہے۔ انہوں نے کہا کہ جولائی میں مرکزی کابینہ کے ذریعہ منظور شدہ نیپ 1986 میں وضع کردہ تعلیم سے متعلق قومی پالیسی کی جگہ لے لی ہے اور اسکولوں اور اعلی تعلیم کے نظام میں “تبدیلی کی اصلاحات” کی راہ ہموار کرنے کے لئے ہندوستان کو “عالمی علمی سپر پاور” بنانے کی راہ ہموار ہوگی۔ اس پالیسی میں جن تین زبانوں کے فارمولے کا تصور کیا گیا ہے وہ بہت اہمیت کا حامل ہے اور یہ کثیر لسانی کے ساتھ ساتھ قومی اتحاد کو بھی فروغ دے سکتا ہے لیکن صدر نے کہا کہ اسی وقت کسی بھی ریاست یا مرکز کے زیر کنٹرول علاقے پر کوئی زبان مسلط نہیں کی جائے گی۔

متعلقہ خبریں

تحریر: رشید پروین ؔسوپور سلسلہ روزو شب نقش گر حادثات
سلسلہ روزو شب اصل حیات و ممات
سلسلہ روزو شب تارِ حریر.

بہ گلشن بدرنی چھس پننہ تہ پننہ انجمن گلشن کلچرل فورم کشمیرکین تمام ارکانن ہندہ طرفہ کشیر ہندین سرکردہ تہ نمایندہ.

گزشتہ شب گلشن کلچرل فورم کشمیراور لسہ خان فدا فاؤنڈیشن نے مشترکہ طور سلسلہ قادریہ وفاضلی کے معروف صوفی بزرگ اور.

تحریر: حافظ میر ابراھیم سلفی عشرتی گھر کی محبت کا مزا بھول گئے
کھا کے لندن کی ہوا عہد وفا بھول گئے
قوم کے غم.

آج یہاں سنور کلی پورہ ماگام میں گلشن کلچرل فورم کشمیرکے اہتمام سے ایک ادبی نشست بزم فریاد منعقد ہوئ۔ کئ مہینوں کے.