ویڑیو

ای پیپر

اہم خبریں

افسر شاہی لوگوں کیلئے وبال جان ، انتظامیہ کا زمینی سطح پر کوئی نام و نشان.

بھاجپا آئین ہند کو پارٹی منشور سے بدلنا چاہتی ہے ،مسئلہ کشمیر کے لئے نوجوانوں.

ڈویژنل کووڈ کنٹرول روم کشمیر کو وباء کی موثر روکتھام کیلئے سراہا
سرینگر.

ایک ماہ میں دوسرا آپریشن/3ملی ٹینٹ جان بحق/موبائیل انٹرنیٹ سروس معطل

   94 Views   |      |   Friday, October, 23, 2020

سرینگر ؍21،جون؍دارالحکومت سرینگر میں محض ایک ماہ میں سیکیورٹی فورسز نے دوسرا بڑاجنگجو مخالف آپریشن عمل میں لایا ،جس دوران بانڈاری محلہ زونی مر سرینگر میں جنگجوئوں اور فورسز کے درمیان ایک خونین معرکہ آرائی میں 3 مقامی جنگجو جاں بحق ہوئے جن میں سے2کا تعلق سرینگر جبکہ ایک کا تعلق جنوبی کشمیر سے بتایا جارہا ہے ۔اس دوران جھڑپ میں ایک رہائشی مکان بھی تباہ ہوا۔ادھر آئی جی کشمیر وجے کمار نے بتایا یہاں محصور جنگجوئوں کو پہلے پولیس نے سرنڈر کرنے کی پیش کش کی ،جس کے بعد پولیس نے جنگجوئوں کے والدین کی مددبھی حاصل کی ہے، تاہم انہوں انکی پیش کش کو بھی ٹکرا دیا ۔انہوں نے کہا کہ آپریشن سیکیورٹی فورسز کیلئے بڑی کامیابی ہے ۔اطلاع کے مطابق سرینگر پولیس اور سی آر پی ایف نے شہر سرینگر کے بانڈاری محلہ زونی مر صورہ سرینگرعلاقے میں سنیچر اوراتوار کی درمیانی شب کو علاقے میںایک مکان کے اندر 2سے3جنگجوئوں کی موجود گی کے حوالے سے مصدقہ اطلاع موصول ہونے کے بعدعلاقے کودوران شب محاصرے ہی محاصرمیں لیا اور صبح ہوتے ہی، یہاں سے گھر گھر تلاشی کارروائیوں کا آغاز کیا ہے ۔پولیس ذرائع نے بتایا فورسز نے پورے علاقے کو مکمل طور سیل کر کے جنگجوئوں کے سبھی فرار کے راستے مسدود کر رکھ دئے ۔ذرائع نے بتایا کہ مقامی لوگوں کی مدد سے پہلے جنگجوئوں کو خود سپردگی کرنے کی کوشش کی ہے ۔انہوں نے بتایا اس دوران فورسز نے جھڑپ سے قبل یہاں محصور جنگجوئوں کے والدین کو بھی بلایا جنہوں جنگجوئوں کو سرنڈر کرنے کے لئے کہا،تاہم انہوں نے پیش کش کو ٹھکرا دیا ۔اس دوران مکان میں چھپے بیٹھے جنگجوئوں نے تلاشی پارٹی پر فائرنگ کر کے یہاں سے فرار ہونے کی کوشش ہے تاہم یہاں تلاشی پارٹی نے بھی جوابی فائرنگ کی ،جس کے ساتھ ہی طرفین کے مابین جھڑپ کا سلسلہ شروع ہوا ۔جنگجوئوں اور فورسز کے درمیان جھڑپ کئی گھنٹوں تک جاری رہی جسدوران فورسز باردوی مواد کا بھی استعمال کیا تاکہ جنگجوئوں کو زیر کیا جاسکے ۔ پولیس نے محاصرے سے قبل ہی شہر سرینگر میں موبائل انٹرنیٹ سروس کو معطل کر کے ممکنہ احتجاجی مظاہروں کو روکنے کیلئے سیکیورٹی کے سخت ترین بندوبست کئے ۔اس دوران فائرنگ کا سلسلہ وقفے وقفے سے جاری رہا ،جس دوران کشمیر پولیس زون نے جھڑپ کے دوران 3جنگجوئوں کی ہلاکت کے حوالے سے تین الگ الگ ٹویٹ کئے جس میں تینوں کی ہلاکت کی تصدیق ہوئی ہے۔پولیس نے بعد دوپہر جائے جھڑپ سے 3 جنگجوئوں کی لاشوں کو برآمد کیا ، تاہم انہوں نے مارے گئے جنگجوئوں کی شناخت ظاہر نہیں کی ہے۔ غیرسرکاری ذرائع سے معلوم ہوا کہ تینوں جاں بحق جنگجوئوں مقامی ہیں جن میں سے دو کا تعلق سرینگر اور ایک کا تعلق جنوبی کشمیر کے بجبہاڑہ سے ہے ۔ طرفین کے مابین جھڑپ میں ایک رہائشی مکان بھی مکمل طور تباہ ہوا ہے۔ آئی جی پی کشمیر نے اس بات کااشارہ دیا ہے کہ جاں بحق جنگجو مقامی تھے ،کیونکہ جھڑپ سے قبل جنگجوئوں کے والدین کو بھی یہاں لایا گیا تھا۔انسپکٹر جنرل آف پولیس( آئی جی پی) کشمیروجے کمار نے فورسز کو کامیابی پر مبارک باد ی دیتے ہوئے بتایاکہ محاصرے میں آئے جنگجوئوں کو سرنڈر کرنے کی پیش کش کی گئی تھی حتیٰ کہ ان کے والدین کو بھی یہاں بلایا گیا ،جنہوں نے اپنے بچوں کو فورسز کے سامنے سرنڈر کرنے کرنے کے لئے کہا۔ تاہم جنگجوئوں نے پیش کش کو ٹھکرادی اور فائرنگ شروع کی ہے، اس طرح سے اس جھڑپ میں میں تین جنگجو جا ں بحق ہوئے۔خیال رہے گزشتہ تین روز کے دوران جنوبی کشمیر کے پانپور ،شوپیان کولگام اور سرینگر میں 12جنگجو جاں بحق ہوئے ہیں۔پولیس نے حالیہ دنوں ایک پریس کانفرنس میں بتایا تھا کہ جنوبی کشمیر میں جنگجوئوں کا مکمل طور صفایا ہوا ہے اور اب توجہ شمالی کشمیر پرمرکزور رہے گئی۔یہاں رواں سال کے6ماہ کیں اب 106جنگجوئوں جاں بحق ہوئے ہیں ۔سرینگر میں 19مئی کو نواکدل علاقے میں اسی طرح کا ایک جنگجو مخالف آپریشن عمل میں لایا تھا ،جس میں حریت لیڈر محمد اشرف صحرائی کے فرزند جنید صحرائی اپنے ایک ساتھی کیساتھ جاں بحق ہوا تھا ۔زونی مر کا جنگجو مخالف آپریشن سرینگر میں دوسرا کامیاب ترین آپریشن ہے ۔(کے این ایس )

متعلقہ خبریں

افسر شاہی لوگوں کیلئے وبال جان ، انتظامیہ کا زمینی سطح پر کوئی نام و نشان نہیں: ساگر
سرینگر؍23، اکتوبر ؍ ؍ جموں.

بھاجپا آئین ہند کو پارٹی منشور سے بدلنا چاہتی ہے ،مسئلہ کشمیر کے لئے نوجوانوں نے بہت قر بانیاں دیں ،اب لیڈران کی.

ڈویژنل کووڈ کنٹرول روم کشمیر کو وباء کی موثر روکتھام کیلئے سراہا
سرینگر 23 اکتوبر//فائنانشل کمشنر صحت و طبی تعلیم.

جموں /23؍اکتوبر//الیکشن اَتھارٹی جموں وکشمیر پنچایتی راج ایکٹ 1989 کے مطابق ہر ضلع ترقیاتی کونسل حلقے کے لئے انتخابی.

دیہی ترقیاتی سیکٹر میں متعدد ترقیاتی کاموں کا معائینہ کیا
متعدد عوامی وَفود سے ملے
بارہمولہ /23؍اکتوبر //آئندہ.